اسرائیلی فورسز کی بربریت کا نشانہ بننے والا ایک اور زخمی نوجوان دم توڑ گیا

جمعرات مئی 16:50

رام اللہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مئی2018ء) فلسطینی وزارت صحت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ایک ہفتہ قبل اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا ایک 15سالہ لڑکا زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے اسپتال میں دم توڑ گیا ہے۔گزشتہ روز ترجمان فلسطینی وزارت صحت کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ گزشتہ ہفتہ صہیونی فورسز کی جانب سے بربریت کا نشانہ بننے والا 15سالہ لڑکا ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا ہے۔

(جاری ہے)

15 سالہ عدی اکرم ابو خلیل فلسطینی 8 روز قبل غرب اردن کے وسطی شہر رام اللہ کے نواحی قصبے البیرہ میں امریکی سفارتخانے کی القدس منتقلی کیخلاف احتجاجی ریلی میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہو گیا تھا۔اسرائیلی فوجیوں نے فلسطینی مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کی تھی،جس کے نتیجے میں ایک گولی عدی ابو خلیل کے پیٹ میں لگی اور اسے شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔واضح رہے کہ گذشتہ برس دسمبر میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے اور حال ہی میں امریکی سفارت خانے کی القدس منتقلی کے بعد غرب اردن اور فلسطین کے دوسرے علاقوں میں پرتشدد مظاہرے جاری ہیں۔۔