شہر و کینٹ میں پانی بحران شدت اختیار کر گیا

ٹینکر مافیا شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے میں مصروف ہو گیا

جمعرات مئی 17:35

راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مئی2018ء) شہر و کینٹ میں پانی بحران شدت اختیار کر گیا ،ٹینکر مافیا شہریوں کو لوٹنے میں مصروف ہو گیا ۔ شہریوں کے مطابق حالیہ عرصہ میں زیر زمین پانی کی سطح میں خطرناک حد تک کمی کی وجہ سے پانی کا بحران سنگین تر ہو گیا ہے اور شہری ٹینکر مافیا کے ہاتھوں مہنگے داموں پانی خریدنے پر مجبور ہیں ۔اس حوالے سے راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ نے شہریوں کوپانی کے باکفایت استعمال کی ہدایت کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ پانی کے ضیاع میں ملوث صارفین کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔

راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ کے ترجمان قیصر محمود نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے بتایاکہ کینٹ کے علاقوں میں پانی کی طلب پوری کرنے کے لیے تمام اقدامات کیے جا رہے ہیں تاھم خانپور ڈیم سے پانی کی فراہمی 9ملین گیلن سے کم کر کے 4ملین گیلن کر دی گئی تھی جس کے بعد پانی کی راشننگ ضروری تھی ۔

(جاری ہے)

قیصر محمود نے قومی خبر ایجنسی کو بتایاکہ راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ پانی کے غیر قانونی کنکشنز کے خلاف بھی کارروائی جا ری رکھے ہوئے ہے ۔

واضح رہے کہ راولپنڈی کینٹ کو حالیہ دنوں میں خانپور ڈیم سے چار ملین گیلن پانی مل رہا ہے جبکہ قبل ازیں 12ملین گیلن کوٹہ کے مقابلے میں راولپنڈی کینٹ کو 9ملین گیلن پانی فراہم کیا جا رہا تھا ۔راولپنڈی کینٹ بورڈ کینٹ کے رہائشیوں کی 19ملین گیلن کی ضروریات خانپور ڈیم اور اپنے 60ٹیوب ویلز کے ذریعے پوری کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے ۔دوسری جانب چکلالہ کنٹونمنٹ بورڈ علاقوں میں بھی پانی بحران سنگین تر ہو گیا ہے ۔

پانی کی قلت کی وجہ سے لوگ پرائیویٹ ٹینکروں کے ذریعے پانی کی خریداری کرنے پر مجبور ہیں۔سیکرٹری چکلالہ کینٹ بورڈ امان اللہ خان نے کینٹ کے رہائشیوں سے اپیل کی کہ وہ پانی کے غیر ضروری استعمال مثلاً گاڑیاں ،فرش دھونے و دیگر غیر ضروری استعمال کو ترک کر دیں ۔امان اللہ نے کہاکہ پانی کا باکفایت استعمال وقت کی اشد ضرورت ہے بصورت دیگر صورتحال سنگین تر ہو سکتی ہے ۔واسا کے زیر انتظام علاقوں امام باڑہ ،کرشن پورہ ،بھابڑہ بازار ،راجہ بازار سمیت دیگر علاقوں میں بھی پانی کی صورتحال سنگین حد تک خراب ہو چکی ہے ۔ذرائع نے اے پی پی کو بتایاکہ اس وقت ڈھوک حسو یو سی 5اور 6میں تقریباً چھ ٹیوب ویلز میں پانی ختم ہوجانے کی وجہ سے یہ ٹیوب ویلز ناکارہ ہو چکے ہیں ۔

متعلقہ عنوان :