مسلمان کشمیری نوجوان کو بطور ڈھال استعمال کرنے والے بھارتی فوج کامیجر رنگ رلیاں مناتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار

جمعرات مئی 20:13

سری نگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مئی2018ء) مسلمان کشمیری نوجوان کو بطور ڈھال استعمال کرنے والے بھارتی فوج کے میجرنتن گوگی کو رنگ رلیاں مناتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتارکر لیا گیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق کشمیری نوجوان کو جیپ سے باندھ کر ڈھال بنانے والا بھارتی فوج کا میجر نتن گوگی ہوٹل کے کمرے سے لڑکی سمیت گرفتارکر لیا گیا۔

(جاری ہے)

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق سری نگر میں کشمیری نوجوان کو اپنی گاڑی سے باندھ کر گھمانے والے میجر گوگی کو نوجوان لڑکی کے ہمراہ ہوٹل کے کمرے سے قابل اعتراض حالت میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔

میجر نتن گوگی کی پوسٹنگ بڈگام کے علاقے میں تھی جہاں وہ گرینڈ ممتا ہوٹل میں 19 سالہ لڑکی کو لیکر آیا جس پر علاقہ مکینوں نے شدید احتجاج کیا اور ہوٹل کا گھیراو کرکے نعرے بازی کی۔ ہوٹل انتظامیہ نے پولیس کو اطلاع دی جس کے بعد ایس ایس پی سری نگر نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر میجر کو لڑکی سمیت حراست میں لے لیا۔واضح رہے کہ میجر نتن گوگی راشٹریہ ریفل کی 53 بٹالین سے تعلق رکھتا ہے اور گزشتہ برس اپریل میں کشمیری نوجوان کو انسانی ڈھال بنانے کے حوالے سے بھی تنقید کا نشانہ بنا تھا۔