کراچی کو میگا سٹی کا درجہ دے کر سرکاری اسکولوں کی نجکاری کو روکا جا ئے ،پاسبان

پرائیویٹ اسکولوں کو فروغ اور سرکاری اسکولوں میں غریب بچوں کیلئے تعلیم کے دروازے بند کئے جارہے ہیں

جمعرات مئی 23:22

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مئی2018ء) پاسبان کراچی کے صدر عبدالحاکم قائد نے سندھ حکومت کی جانب سے سرکاری اسکولوں کو لینڈ مافیا کے سپرد کرنے کی خبروں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کیا پورے ملک کو سب سے ذیادہ ریونیو دینے والا شہر کراچی خستہ حال اسکولوں کی تعمیرات نہیں کرسکتا عبدالحاکم قائد نے چیف جسٹس سندھ سے استدعا کی ہے کہ وہ مقامی اخبارمیںشائع ہونے والی اس خبر کہ جس میں سندھ حکومت کی جانب سے سرکاری اسکول کو لینڈ مافیا کے سپرد کرنے اور اسکول کے طلبہ و طالبات کو کسی دوسرے اسکول میں داخلہ لینے کی ہدایت کی ہے کا نوٹس لیں ۔

(جاری ہے)

سرکاری اسکولوں کی نجکاری تعلیم دشن اقدام ہے اور اس سے پرائیویٹ اسکولز کی تعداد میں اضافہ ہوگا اور غریب بچوں کے لئے تعلیم کا حصول مزید مشکل ہو جائے گا ۔ پاسبان پریس انفارمیشن سیل سے جاری کردہ بیان میں عبدالحاکم قائد قائد نے کہا کہ کراچی کو میگا سٹی کا درجہ دیا جائے تو سرکاری تعلیمی اداروں کی خستہ حالی کو ختم اور تعلیم کے معیار کو بہتر بنایا جاسکتا ہے ،میگا سٹی شہر کراچی والوں کا حق ہے ۔ پرائیویٹ اسکولز مافیا کو حکومتی سرپرستی حاصل ہے یہی وجہ ہے کہ حکومت سرکاری اسکولز کی نجکاری کرکے پرائیویٹ اسکولز مافیا کو فائدہ پہنچا رہی ہے ۔