لارڈز ٹیسٹ ، کھانے کے وقفے پر پاکستان کا پلڑا بھاری

اظہر علی کی نصف سنچری

جمعہ مئی 17:06

لارڈز ٹیسٹ ، کھانے کے وقفے پر پاکستان کا پلڑا بھاری
لندن(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔25مئی 2018ئ) قومی کرکٹ ٹیم نے لارڈز ٹیسٹ کے دوسرے روز کھانے کے وقفے پر 3وکٹوں کے نقصان پر136 رنز سکور کرلیے ہیں ۔۔پاکستان نے کھیل کے دوسرے روز اپنی پہلی نامکمل اننگز کا آغاز کیا تو حارث سہیل 21 اور اظہر علی 18 رنز کے ساتھ وکٹ پر موجود تھے۔دونوں کھلاڑیوں نے ٹیم کا سکور آگے بڑھانا شروع کیا تاہم87کے مجموعی سکور پر حارث سہیل 39رنز بنا کر مارک ووڈ کا شکار بن گئے، اظہر علی نے اپنے ٹیسٹ کیریئر کی28ویں نصف سنچری سکور کی تاہم50کے انفرادی سکور پر ہی و ہ جیمز اینڈرسن کا شکار بن گئے ۔

اس سے قبل لارڈز کے تاریخی میدان پر کھیلے جا رہے سیریز کے پہلے ٹیسٹ میچ میں انگلینڈ کے کپتان جو روٹ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ جو کچھ اچھا ثابت نہ ہوا۔

(جاری ہے)

اننگز کے چوتھے ہی اوور میں محمد عباس نے 4 رنز بنانے والے مارک اسٹون مین کی وکٹیں بکھیر کر پاکستان کا پہلی کامیابی دلائی۔اس کے بعد ایلسٹر کک کا ساتھ دینے کپتان روٹ آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے اسکور کو 33 تک پہنچا دیا تاہم اس موقع پر سرفراز احمد نے حسن علی کو باﺅلنگ پر متعارف کرایا جنہوں نے کپتان کے اعتماد پر پورا اترتے ہوئے روٹ کی اہم وکٹ حاصل کی۔

پاکستان کو تیسری کامیابی کے لیے بھی زیادہ انتظار نہیں کرنا پڑا اور 43 مجموعی اسکور حسن نے ڈیوڈ ملان کو چلتا کر کے انگلش بیٹنگ لائن کی صفیں الٹ دیں۔43رنز پر 3 وکٹیں گرنے کے بعد ایلسٹر کک کا ساتھ دینے بیئراسٹو آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے پراعتماد انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے کھانے کے وقفے تک مزید کوئی وکٹ نہ گرنے دی۔اس جوڑی نے 57 رنز کی شراکت قائم کی اور کھانے کے وقفے کے بعد ٹیم کی سنچری مکمل کرائی ہی تھی کہ فہیم اشرف نے بیئراسٹو کی وکٹیں بکھیر کر ان کی اننگز کا خاتمہ کردیا۔

اس کے بعد کک کا ساتھ دینے بین سٹوکس آئے اور دونوں نے پانچویں وکٹ کے لیے 49 رنز کی شراکت قائم کر کے ابتدائی نقصان کا ازالہ کرنے کی کوشش کی لیکن 149 کے مجموعی اسکور پر محمد عامر کو بولڈ کر دیا جنہوں نے آﺅٹ ہونے سے قبل 70 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔اس موقع پر محمد عباس اور حسن علی نے شاندار باﺅلنگ کا مظاہرہ کیا اور مزید 35 رنز کے اضافے سے پوری انگلش ٹیم کی بساط لپیٹ دی۔

بین اسٹوکس 38، جو بٹلر 14، ڈومینک بیس 5، مارک وڈ 7 اور سٹورٹ براڈ بغیر کوئی رن بنائے آﺅٹ ہوئے۔۔پاکستان کی جانب سے عباس اور حسن نے شاندار باﺅلنگ کرتے ہوئے 4، 4 وکٹیں حاصل کیں۔۔پاکستان کی اننگز کا آغاز بھی کچھ اچھا نہ تھا اور امام الحق صرف 4 رنز بنانے کے بعد سٹورٹ براڈ کی گیند پر وکٹوں کے سامنے پیڈ لانے کے جرم میں وکٹ گنوا بیٹھے۔اس کے بعد اظہر علی اور حارث سہیل نے ذمے دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور 17 اوورز سے زائد بیٹنگ کرتے ہوئے انگلش باﺅلرز کا ڈٹ کر سامنا کرتے ہوئے دن کے اختتام تک کوئی وکٹ نہ گرنے دی۔جب پہلے دن کا کھیل ختم ہوا تو پاکستان نے ایک وکٹ کے نقصان پر 50 رنز بنائے تھے اور اسے انگلینڈ کی پہلی اننگز کا اسکور برابر کرنے کے لیے مزید 134 رنز درکار تھے۔