میں کسی کی بیٹی بہن کوجیل میں نہیں دیکھنا چاہتا،آصف زرداری

مریم نوازکوکٹہرے میں نوازشریف کی وجہ سےکھڑا ہونا پڑا،ہم اسٹیبلشمنٹ کے نہیں پاکستان کیساتھ ہیں، میاں صاحب بتائیں پاکستان کے ساتھ ہیں یا دنیا کسی اور قوت کے ساتھ ہیں۔شریک چیئرمین پیپلزپارٹی آصف زرداری کی پریس کانفرنس

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ مئی 18:08

میں کسی کی بیٹی بہن کوجیل میں نہیں دیکھنا چاہتا،آصف زرداری
اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔25 مئی 2018ء) : پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدرمملکت آصف زرداری نے کہا ہے کہ فاٹا کے انضمام پرپارلیمنٹ اورعوام کومبارکباد پیش کرتا ہوں، نوازشریف ہمیشہ دہرے بیان دیتے رہے ، ہم اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ نہیں ،،پاکستان کے ساتھ ہیں، میاں صاحب بتائیں گے وہ پاکستان کے ساتھ ہیں یا اسٹیبشلمنٹ کے ساتھ ہیں، یادنیاکسی اور قوت کے ساتھ ہیں۔

انہوں نے آج یہاں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ شہید ذوالفقار اور بے نظیر بھٹو کی سوچ اور فلاسفی کی کامیابی ہے۔انہوں نے کہا تھا کہ10سالوں میں فاٹا کو خیبرپختونخواہ میں ضم کریں گے۔ بی بی محترمہ نے کہاکہ یہ علاقہ غیرکیوں ہے؟ ذوالفقار بھٹو شہید نے فاٹا میں سیاست کا آغاز کیا۔بے نظیرفاٹا کا معاملہ سپریم کورٹ میں لے کرگئی تھیں۔

(جاری ہے)

کچھ لوگ سیاسی ایجنڈا کی بنیاد پرمخالفت کرتے آئے ہیں لیکن ان کوخطرہ تھا کہ ان ی سیاست ختم ہوجائے گی۔

جب میں صدر تھا تومیں نے خود جرگہ بلایا تھا۔ میں اس وقت اس لیے نہ کیا کہ میاں صاحب اس وقت فاٹا معاملے پرہم سے گیم کھیل رہے تھے جو آج بھی کھیل رہے ہیں۔ سیاسی جماعتیں اور سیاست ہی بدامنی کا علاج ہے۔انہوں نے کہاکہ فاٹا کے انضمام پرپوری پارلیمنٹ ، فاٹا عوام کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ تاریخ میں انسان ایک کام کرتا ہے تواس کا صلہ آنے والے دنوں میں ضرور ملتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ نوازشریف ہمیشہ سے دوہرے بیان دیتے رہے ہیں۔مشرف میرالیڈر نہیں تھا کہ اس کے معاملے پرنوازشریف سے ملتا۔انہوں نے مزید کہاکہ مشرف سے میری کوئی دوستی، عداوت نہیں تھی، میں نے تواس کوایوان صدر سے نکالا تھا۔میں مشرف کو صدارت سے ایسے ہٹایا جیسے دودھ دے مکھی کوہٹایا جاتا ہے۔مشرف کو نکالنا اور ڈکٹیٹر کوگھر بھیجنا میرے لیے اہم تھا۔

اس لیے سیاسی محاذآرائی سے بچنے کیلئے پنجاب ن لیگ کودیا۔اگر میں اس وقت پنجاب میں پیر رکھ دیتا توپنجاب ان کے پاس نہ جاتا۔ اس فیصلے سے میری پارٹی آج بھی متاثر ہے۔انہوں نے کہاکہ ہم اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ نہیں ،،پاکستان کے ساتھ ہیں۔ میاں صاحب بتائیں گے وہ پاکستان کے ساتھ ہیں یا اسٹیبشلمنٹ کے ساتھ ہیں، یا دنیا کسی اور قوت کے ساتھ ہیں۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان دھرنا نہیں دے سکتے تھے اگر قادری صاحب کندھا نہ دیتے۔

انہوں نے نعیم الحق کے دانیال عزیز کوتھپڑ مارنے پرکہا کہ تھپڑ مارنے والی سیاست میں اچھی بات نہیں ہے۔اس طرح کی سیاست کی حوصلہ شکنی کرنی چاہیے۔ آصف زرداری نے کہا کہ ہم نے نگران وزیراعظم کیلئے دو نام دیے ہیں ان میں ایک سابق سیکرٹری اور ایک بزنس مین ہے۔انہوں نے کہا کہ مریم نواز کوکٹہرے میں میاں صاحب کی وجہ سے کھڑا ہونا پڑ رہا ہے۔میں کسی کی بیٹی ،بہن کو جیل میں نہیں دیکھنا چاہتا۔ میں جب جیل میں تھا تب بھی یہ لوگ ججز کے ساتھ ملکر سازشیں کرتے تھے۔