انڈونیشیا،انسداد دہشت گردی کے سخت قوانین منظور

مشتبہ21 روز تک زیرحراست رکھا جا سکے گا،دہشت گرد تنظیم میں شمولیت کی اطلاع پر بھی گرفتارکرلیاجائے گا

جمعہ مئی 20:23

جکارتہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 مئی2018ء) انڈونیشیا میں یکے بعد دیگرے بم دھماکوں کے واقعات کے بعد انسداد دہشت گردی کے سخت قوانین کو منظور کر لیا گیا،مشتبہ دہشت گرد کو 21 روز تک حراست میں رکھا جا سکے گا،،دہشت گرد تنظیم میں شامل ہونے کی اطلاع پر بھی گرفتاری عمل میں لائی جا سکے گی۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق انڈونیشیا نے انسداد دہشت گردی کے لیے سخت قانون منظور کر لیا ہے۔

(جاری ہے)

اس قانون کے مطابق کسی مشتبہ دہشت گرد کو 21 روز تک حراست میں رکھا جا سکے گا جب کہ پولیس ان افرا کے خلاف بھی مقدمہ درج کر سکے گی، جو کسی ملکی یا غیرملکی دہشت گرد تنظیم میں بھرتی ہو رہے ہوں۔ یہ قانونی بل گزشتہ دو برس سے متعدد امور پر اختلافات کی وجہ سے پارلیمانی منظوری حاصل کرنے سے قاصر تھا۔ تاہم رواں ماہ ہونے والے پے در پے دہشت گردانہ حملوں کے بعد اس قانون کو منظور کر لیا گیا۔ رواں ماہ انڈونیشیا میں دو مختلف دہشت گردانہ واقعات میں 13 افراد ہلاک ہو گئے تھے، جب کہ ان حملوں کی ذمہ داری دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ نے قبول کی تھی۔

متعلقہ عنوان :