جامعہ سندھ ٹھٹھہ کیمپس کا علم و شعور کی روشنی کو نئی نسل تک پہچانے میں بھرپور کردار ہے،وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر فتح محمد برفت

جمعہ مئی 22:43

حیدرآباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 مئی2018ء) ٹھٹھہ سندھ کی قدیم تہذیب کی پہچان اور پاکستان کا دل ہے، جس کو تاریخ میں علم و ادب کا مرکز ہونے والی خصوصی پہچان حاصل ہے یہاں پر نامور علمی، ادبی اور مذہبی شخصیات نے جنم لیا، جنہوں نے پورے خطے کے اندر علم و شعور کی روشنی پھیلائی اور ذہنوں کی آبیاری کی جامعہ سندھ ٹھٹھہ کیمپس علم و شعور کی اس روشنی کو نئی نسل تک پہچانے کے سلسلے میں بھرپور کوشش کر رہا ہے، کیمپس میں ڈزاسٹر رسک رڈکشن رسورس سینٹر کا قیام کتنے ہی حوالوں سے فائدہ مند ثابت ہوگاجامعہ سندھ جامشورو اور ان کے تمام کیمپسز میں جدید دور کی ضروریات کے مطابق مزید نئے تحقیقی سینٹر قائم کرنے کی طرف خصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔

ان خیالات کا اظہار جامعہ سندھ کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر فتح محمد برفت نے جامعہ سندھ ٹھٹھہ کیمپس میں قائم کئے گئے ڈزاسٹر رسک رڈکشن رسورس سینٹر کی افتتاحی تقریب سے مہمان خصوصی کی حیثیت میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

وائس چانسلر نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ ٹھٹھہ ساحلی پٹی پہ ہونے کی وجہ سے زیادہ تر قدرتی آفات کے خطرے میں رہتا ہے، اس سینٹر کے قیام سے قدرتی آفات کے پیچھے موجود اصل اسباب کو جانچنے کے لئے سائنسی بنیادوں پر مختلف نئے زاویوں سے تحقیق کرنا، ان آفات سے نمٹنے کے لئے حفاظتی تدابیر جوڑنا، لوگوں میں اس سلسلے میں آگہی پیدا کرنا، انہیں تربیت دینا، نقصانات کے اثرات کو زیادہ سے زیادہ کم کرنے کی کوشش کرنے سمیت مختلف فوائد حاصل ہونگے ڈاکٹر برفت نے مزید کہا کے قدرتی آفات کو روکنا بھلے ہمارے بس کی بات نا ہو لیکن حفاظتی تدابیر کے ذریعے نقصانات کے اثرات کو کم کرنے کی کوشش ضرور کی جا سکتی ہے۔

امید ہے کی یہ سینٹر اس حوالے سے اپنا بھرپور کردار ادا کریگا اور یہاں کے لوگوں کے لئے کافی مددگار ثابت ہوگا۔ وائیس چانسلر نے اپنے خطاب میں جامعہ سندھ ٹھٹھہ کیمپس کے فوکل پرسن پروفیسر ڈاکٹر سرفراز حسین سولنگی اور ان کی پوری ٹیم کی کوششوں کی بہت تعریف کرتے ہوئے سینٹر کے قیام کے سلسلے میں تعاون کرنے پر ملٹیسر انٹرنیشنل کا بھی شکریہ ادا کیا اور یہ امید ظاہر کی کہ مشترکہ تعاون کے ذریعے سے اس سینٹر کے قیام کے مقاصد میں ضرور کامیابی حاصل ہوگی اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے جامعہ سندھ ٹھٹھہ کیمپس کے فوکل پرسن پروفیسر ڈاکٹر سرفراز حسین سولنگی نے کہا کہ ٹھٹھہ، سجاول اور بدین ضلعے ساحلی پٹی پر ہونے کی وجہ سے قدرتی آفات اور خطرات کے اثر میں رہتے ہیں۔

سمندر تیزی سے آباد زمینوں کو نگل رہا ہے، اس کے نتیجے میں بہت سارے ماحولیاتی مسائل بھی جنم لے رہے ہیںاس صورتحال میں کیمپس کے اندر ملٹیسر انٹرنیشنل کے تعاون سے اس سینٹر کا قیام بہت فائدہ مند ثابت ہوگا۔۔ڈاکٹر سولنگی نے وائس چانسلر ڈاکٹر فتح محمد برفت کی جانب سے سینٹر کے قیام کے سلسلے میں مکمل رہنمائی اور مدد کرنے پر ان کا خصوصی شکریہ ادا کیا اور ملٹیسر انٹرنیشنل سندھ کے ایریا کوآرڈینیٹر مبشر حسن کے تعاون کا بھی شکریہ ادا کیا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ملٹیسر انٹرنیشنل سندھ کے ایریا کوآرڈینیٹر مبشر حسن نے کہا کہ ان کی تنظیم نے ہمیشہ ان علائقوں اور لوگوں کے لئے کوشش کی ہے جو قدرتی آفات کا سامنہ کر رہے ہیں۔ انہوں نے اپنے خطاب میں جامعہ سندھ کے وائس چانسلر اور ٹھٹھہ کیمپس کی انتظامیہ کا تعاون کرنے پرخصوصی شکریہ ادا کیاتقریب کے آغاز میں ڈائریکٹر سینٹر فار کوسٹل اینڈ ڈیلٹک اسٹڈیز پروفیسر ڈاکٹر مختیار احمد مہر نے شریک مہمانان کا خیر مقدم کیا اور سینٹر کے قیام کے مقاصد پر روشنی ڈالی-

متعلقہ عنوان :