رمضان المباک کے دوران شیشہ پینا زیادہ خطرناک ہے ، طبی ماہرین

ہفتہ مئی 12:40

رمضان المباک کے دوران شیشہ پینا زیادہ خطرناک ہے ، طبی ماہرین
فلوریڈا ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 مئی2018ء) طبی ماہرین نے کہا ہے کہ رمضان المباک کے دوران شیشہ پینا زیادہ خطرناک ہے کیونکہ روزے کی وجہ سے جسم پانی کی کمی کا شکار ہوتاہے اورا سے پہلے ہی گلوکوزاور آکسیجن کی ضرورت ہوتی ہے ۔

(جاری ہے)

ہیلتھ شیلڈ میڈیکل سینٹر میں ماہر امرض قلب ڈاکٹر غانیہ سلیمانی نے بتایا کہ روزہ رکھنے کے باعث تمباکو کے اثرات مزید تباہ کن ہوجاتے ہیں کیونکہ خون پتلا ہونے کے باعث بلڈ پریشر میں اضافہ ہو جاتاہے اور خون میں لوتھڑے بننے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے اور دل کی دھڑکن بھی بے ترتیب ہو جاتی ہے ۔

عالمی ادارہ صحت کا کہناہے کہ ایک تحقیق سے ثابت ہو چکاہے کہ ایک گھنٹہ شیشہ پینا 100 سگریٹس پینے کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ شیشہ یا حقے کے واٹر پائپ میں پانی ہونے کے باوجود ان کے دھوئیں میں سرطان کا باعث بننے والے کیمیکلز موجود ہوتے ہیں ۔ ڈاکٹر سلیمانی نے سگریٹ نوشوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ رمضان المبارک کو سگریٹ نوشی ترک کرنے کا اچھا موقع سمجھیں ۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ شیشے اور سگریٹ کے تمباکو میں 4000 سے زائدسرطانی کمپائونڈز ، زہریلے مادے ، نکوٹین اور ٹار وغیرہ ہوتے ہیں ۔