چین کے صدر شی جن پنگ کا " بگ ڈیٹا " کے حوالے سے عالمی تعاون کے فروغ پر زور

ہفتہ مئی 13:02

بیجنگ ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 مئی2018ء) چین کے صدر شی جن پنگ نے " بگ ڈیٹا " صنعت کی ترقی کے حوالے سے عالمی سطح پر تبادلے اور تعاون کے فروغ پر زور دیا ہے۔صدر شی نے ہفتے کے روز سے چین کے صوبہ گوئی چو کے شہر گوئی یانگ میں شروع ہونے والی " انٹرنیشنل بگ ڈیٹا انڈسٹری ایکسپو 2018 " کے نام ایک تہنیتی خط میں ان خیالات کا اظہار کیا۔انہوں نے کہا کہ انٹرنیٹ ، بگ ڈیٹا اور مصنوعی ذہانت جیسی نیو جنریشن انفارمیشن ٹیکنالوجیز کی تیز رفتار ترقی نے سماجی و اقتصادی ترقی ، ریاستی نظم و نسق ، سماجی انتظام اور تمام ممالک کے عوام کی زندگیوں پر نمایاں اور دور رس اثرات مرتب کیے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ممالک بگ ڈیٹا کے شعبے میں پائے جانے والے مواقعوں سے مستفید ہونے کے لیے روابط و تعاون کو فروغ دیں ، مذکورہ شعبے کی صحتمندانہ ترقی کو فروغ دیں اور ڈیٹا سیکیورٹی اور سائبر اسپیس انتظام جیسے چیلنجز سے نمٹیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ چین بگ ڈیٹا کی ترقی کو نمایاں اہمیت دیتا ہے اور سب کے لیے جدید ، مربوط ، گرین اور کھلی ترقی کے وژن کے تحت چین ایک قومی بگ ڈیٹا حکمت عملی پر عمل پیرا ہے۔

مذکورہ حکمت عملی کے تحت سائبر اسپیس کے شعبے میں چین کی مضبوطی ، ڈیجیٹل چائنا اور سمارٹ معاشرے کی حوصلہ افزائی جیسے امور شامل ہیں جن کے ذریعے ملکی معیشت کو تیز رفتار ترقی سے اعلیٰ معیاری ترقی میں تبدیل کیا جائے گا۔چینی صدر نے اس توقع کا اظہار کیا کہ ایکسپو کے شرکاء بگ ڈیٹا کے شعبے کے فروغ کے لیے دانشمندانہ تبادلہ خیال کر سکیں گے جس سے تمام لوگ مستفید ہو سکیں گے اور بنی نوع انسان کے ہم نصیب سماج کے قیام میں مدد مل سکے گی۔

متعلقہ عنوان :