وزیر ا عظم کل جنوبی پنجاب کے شہروں شجاع آباد اورراجن پور کا دورہ کر رہے ہیں ، شاہد خاقان عبا سی دو بڑے منصوبوں کا افتتاح کرینگے

ہفتہ مئی 13:06

وزیر ا عظم کل جنوبی پنجاب کے شہروں شجاع آباد اورراجن پور کا دورہ کر ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 مئی2018ء) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کل ہفتہ کو جنوبی پنجاب کے شہروں شجاع آباد اورراجن پور کا دورہ کر رہے ہیں جہاں وہ دو بڑے منصوبوں کا افتتاح کرینگے جن میں سکھر ، ملتان موٹروے (ایم 5) کا ملتان شجاع آباد سیکشن اور دریائے سندھ پر شہید بے نظیر بھٹو پل کا منصوبہ شامل ہیں۔ اپنے دورہ کے موقع پر وزیر اعظم پہلے شجاع آباد جائیں گے جہاں وہ ملتان شجاع آباد سیکشن کا افتتاح کرینگے ، بعد ازاں وہ راجن پور کے علاقہ مٹھن کوٹ میں این 55 اور این 5 کو ملانے والے پل کا افتتاح کرینگے۔

شہید بے نظیر بھٹو پل دریائے سندھ پر تعمیر کیا گیا ہے۔ وزیر اعظم ہائوس سے جاری بیان کے مطابق موٹر وے سیکشن سے ملتان اور شجاع آباد کے درمیان سفری سہولیات میں اضافہ اور آسانی ہوگی۔

(جاری ہے)

سکھر ملتان موٹروے کراچی ، لاہور موٹر وے منصوبے کا حصہ ہے جو چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے کے تحت تعمیر کی جا رہی ہے ۔ اس منصوبے پر 2016ء میں کام کا آغاز کیا گیا تھا جو 2019ء میں مکمل ہوگا۔

یہ چھ رویہ سڑک ہے جو گھوٹکی ، رحیم یار خان ، صادق آباد اور بہاولپور سمیت محتلف بڑے شہروں سے گزرے گی۔ یہ سڑک صوبہ سندھ کو صوبہ پنجاب سے ملانے میں بھی اہم کردار ادا کرے گی۔ اس منصوبہ میں پلوں ، انٹر چینجز اور انڈر پاسیز سمیت سروس ایریاز کے علاوہ دیگر سہولیات بھی شامل ہیں ، اس منصوبے کا اہم مقصد یہ ہے کہ مسافروں اور سامان کی ترسیل کیلئے تیز ترین سفری سہولت فراہم کی جا سکے ، جس کی تکمیل سے ملک کے کئی بڑے معاشی اور صنعتی مراکز کی سہولتوں میں اضافہ ہوگا۔

موٹر وے کا یہ منصوبہ نا صرف ماحولیات کی ترقی میں مدد دے گا بلکہ اس سے ٹرانسپورٹ کے موجودہ بنیادی ڈھانچے کی ترقی بھی ہوگی جو قومی معیشت کیلئے کئی طرح کے فوائد کی حامل ہے ۔منصوبہ کی تکمیل سے ٹریفک کی روانی میں بہتری سے تیل کی بچت ہوگی جبکہ اس سے ملک کے بڑے شہروں کے درمیان فاصلوں کو بھی کم کرنے میں مدد کے علاوہ ٹریفک حادثات کے باعث ہونے والے نقصانات کو بھی کم کیا جاسکے گا۔

بیان کے مطابق دریائے سندھ سے تعمیر کیا جانے والے بے نظیر بھٹو شہید پل کا منصوبہ جی ٹی روڈ پر واقع ظاہر پیر (این 5) اور انڈس ہائی وے (این55) پر واقع مٹھن کوٹ کو ملانے میں معاون ثابت ہوگا۔ اس پل کی تعمیر سے ملک کے کئی شہروں کے درمیان فاصلوں کو کم کرنے میں مدد ملے گی۔ اس سے کراچی اور کشمور سمیت رحیم یار خان ، بہاولپور ، ملتان ، فیصل آباد اور لاہور کے درمیان فاصلہ کو بھی کم کیا جا سکے گا۔ یہ منصوبہ علاقے کی عوام کا قدیمی مطالبہ تھا جس کی تکمیل سے دریائے سندھ کے دونوں جانب واقع علاقوں اور شہروں کی معاشی ترقی میں مدد ملے گی۔ یہ پل 1.2کلو میٹر طویل ہے جبکہ اس کی چوڑائی 12.2میٹر ہے ۔