اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے حلقہ بندیوں کو لاہور ہائی کورٹ میںچیلنج کردیا

عام انتخابات سے قبل حکومتی اراکین کے بعد اپوزیشن نے بھی حلقہ بندیوں پر اعتراضات دائر کر دئیے

ہفتہ مئی 22:45

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 مئی2018ء) عام انتخابات سے قبل حکومتی اراکین کے بعد اپوزیشن نے بھی حلقہ بندیوں پر اعتراضات دائر کر دئیے‘زیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے حلقہ بندیوں کو لاہور ہائی کورٹ میںچیلنج کردیا۔تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے مرکزی رہنما اور پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے حلقہ بندیوں کو لاہور ہائی کورٹ میں چیلنچ کردیا، میاں محمودالرشید نے الیکشن کمیشن کی جانب سے پی پی 151 اور پی پی 160 کی نئی حلقہ بندی کے خلاف لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا۔

(جاری ہے)

درخواست میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کو فریق بنایا گیا ہے درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن نے بیس اپریل کو پی پی 151 اور پی پی 160 کی حلقہ بندیوں سے متعلق خلاف قوانین فیصلہ سنایا الیکشن کمیشن قومی اسمبلی کے حلقے کو دو سے زائد حلقوں میں تقسیم کیاالیکشن کمیشن نے حلقہ بندیوں کے اعتراضات کو دور نہیں کیا، درخواست گزار کے حلقے کو مختلف حصوں میں بانٹ دیا گیادرخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت الیکشن کمیشن کی جانب سے پی پی 151 اور 160 کی گئی حلقہ بندی کے اقدام کو کالعدم قرار دے۔