بدلتے ہوئے عالمی حالات نے پاکستان اور روس کو حلیف بنا دیا ہے۔ایف پی سی سی آئی

علاقائی ممالک کے ساتھ تجارتی تعلقات بڑھانا ضروری ہو گیا ہے،مظہر علی ناصر

اتوار مئی 12:00

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 مئی2018ء) فیڈریشن آف پا کستا ن چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی(ایف پی سی سی آئی) نے کہا ہے کہ مغربی ممالک کے ساتھ علاقائی ممالک کے تجارتی تعلقات بڑھانا ضروری ہے۔ستر سال تک پاکستان کے سیاسی و تجارتی تعلقات کا جھکائو مغرب کی جانب رہا ہے مگر اب وقت آ گیا ہے کہ چین کے علاوہ ترکی اور روس سے بھی تعلقات بڑھائے جائیں۔

پاکستان اور روس کے مابین توانائی اور دیگر شعبوں میں دس ارب ڈالر سے زیادہ کے معاہدے ہیں جس سے دونوں ممالک قریب آئیں گے۔ ان خیالات کا اظہار ایف پی سی سی آئی کے اول نائب صدر سید مظہر علی ناصر، نائب صدر عاطف اکرام، چئیرمین کوآرڈینیشن ملک سہیل اور ساسی کی ڈائریکٹر جنرل ماریہ سلطان نے سینٹ پیٹرز برگ میں اقتصادی فورم کے دوران روس کے تجارتی حکام اور کاروباری تنظیموں کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔

(جاری ہے)

انھوں نے کہا کہ بدلتے ہوئے عالمی حالات نے پاکستان اور روس کو حلیف بنا دیا ہے اور وقت کے ساتھ دونوں ممالک کی یہ دوستی گہری ہوتی جائے گی۔اس فورم میں فرانس اور روس کے صدور، جاپان کے وزیر اعظم، چین کے نائب صدراور آئی ایم ایف کی سربراہ سمیت بہتر ممالک سے پندرہ ہزار افرادنے شرکت کی جبکہ ایک سو ارب ڈالر کے تجارتی معاہدوں پر دستخط کئے گئے جس سے اس فورم کی اہمیت کا پتہ چلتا ہے۔ فورم میں بھارت اور افریقی ممالک کی پویلین بھی تھے ۔ایف پی سی سی آئی نے فیصلہ کیا ہے کہ اگلے سال سے اس سالانہ فورم میں بھرپور شرکت کی جائے گی۔