کوریائی سربراہان کی اہم ملاقات،دونوں رہنماء ٹرمپ سے ملاقات کے لیے پرعزم

کم جونگ اٴْن جوہری ہتھیار ترک کرنے پرآمادہ،امن کے لیے ہماری کوششیں رکنی نہیں چاہئیں،صدرجنوبی کوریا

اتوار مئی 12:20

سیول(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 مئی2018ء) جنوبی کوریانے کہاہے کہ شمالی کوریا کہ رہنما کم جونگ ان مکمل طور پر جوہری ہتھیاروں کو ترک کرنے اور امریکی صدر کے ساتھ طے شدہ ملاقات کے لیے پرعزم ہیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق جنوبی کوریا کے صدر مون جے ان نے یہ بات اتوار کو شمالی کوریا کہ رہنما کم جونگ ان سے ملاقات کے بعد کہی۔جنوبی کوریا کے صدر نے پریس کانفرنس میں کہا کہ جونگ ان سے ملاقات میں اس بات پر اتفاق ہوا کہ 12 مئی کو سنگاپور میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ طے شدہ ملاقات ہونی چاہیے۔

چیئرمین کم اور میں نے اتفاق کیا ہے کہ 12 مئی کی ملاقات طے شدہ شیڈول کے مطابق کامیابی سے ہونی چاہیے اور جزیرہ نما کوریا کو جوہری ہتھیاروں سے پاک اور امن کے لیے ہماری کوششیں رکنی نہیں چاہئیں۔

(جاری ہے)

صدر مون کے ترجمان نے بتایا کہ ان کی شمالی کوریا کے سربراہ سے ملاقات ہوئی ہے اوردونوں رہنمائوں کے درمیان تقریبا دو گھنٹے تک جاری رہنے والے مذاکرات میں صاف نیتی کے ساتھ تبادلہ خیال ہوا۔ شمالی کوریا اور جنوبی کوریا کے رہنماؤں کے درمیان ملاقات مقامی وقت کے مطابق دوپہر تین بجے سے سات بجے کے دوران ہوئی۔جنوبی کوریا کے صدارتی دفتر کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ دونوں رہنماؤں نے شمالی کوریا اور امریکہ کے درمیان اجلاس کو کامیاب بنانے کے بارے میں بات چیت کی۔