نواز شریف عمران خان کی پنجاب میں بڑھتی ہوئی مقبولیت کو روکنے کے لیے کس سے مدد لینا چاہتے ہیں؟ حیرت انگیز انکشاف سامنے آ گیا

نواز شریف چاہ رہے ہیں کہ موجودہ سیاسی حالات میں کسی نا کسی طرح وہ آصف زرداری کواپنے ساتھ ملا لیں لیکن زرداری ایسا کرنے کو تیار نہیں ہیں

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان اتوار مئی 13:41

نواز شریف عمران خان کی پنجاب میں بڑھتی ہوئی مقبولیت کو روکنے کے لیے ..
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔27 مئی 2018ء) معروف کالم نگار خاور گھمن کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف پنجاب میں پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کی بڑ ھتی ہوئی مقبولیت کو روکنے کے لیے آصف علی زرداری کے ساتھ ہاتھ ملانے کو تیار ہیں۔ تفصیلات کے مطابق معروف کالم نگار خاور گھمن کا اپنے ایک کالم نگران وزیراعظم کے انتخاب میں رکاوٹ کون؟ میں کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف اب سابق صدر آصف علی زرداری سے ہاتھ ملانا چاہتے ہیں،،نوازشریف کے قریبی حلقوں کا خیال ہے کہ وہ چاہ رہے ہیں کہ موجودہ سیاسی حالات میں کسی نا کسی طرح وہ آصف زرداری کو ساتھ ملا لیں ۔

۔کچھ ایسے حالات پیدا کیے جائیں عمران کی پنجاب میں بڑھتی ہوئی مقبولیت کو روکا جاسکے اس کے لئے نوازشریف آصف زرداری کے ساتھ کسی بھی حد تک جانے کو تیار ہیں۔

(جاری ہے)

دوسری جانب لگتا ہے زرداری صاحب نے حالات کو بھانپ لیا ہے وہ ہر گز نواز شریف کی ڈوبتی کشتی میں سوار نہیں ہونا چاہیں گے ۔یادرہےکہپیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدرمملکت آصف زرداریہ فاٹا کے انضمام پرپارلیمنٹ اور فاٹا کے عوام کومبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ نوازشریف ہمیشہ سے دوہرے بیان دیتے رہے ہیں۔

مشرف میرالیڈر نہیں تھا کہ اس کے معاملے پرنوازشریف سے ملتا۔انہوں نے مزید کہاکہ مشرف سے میری کوئی دوستی، عداوت نہیں تھی، میں نے تواس کوایوان صدر سے نکالا تھا۔میں مشرف کو صدارت سے ایسے ہٹایا جیسے دودھ دے مکھی کوہٹایا جاتا ہے۔مشرف کو نکالنا اور ڈکٹیٹر کوگھر بھیجنا میرے لیے اہم تھا۔ اس لیے سیاسی محاذآرائی سے بچنے کیلئے پنجاب ن لیگ کودیا۔ اگر میں اس وقت پنجاب میں پیر رکھ دیتا توپنجاب ان کے پاس نہ جاتا۔ اس فیصلے سے میری پارٹی آج بھی متاثر ہے۔انہوں نے کہاکہ ہم اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ نہیں ،،،،پاکستان کے ساتھ ہیں۔ میاں صاحب بتائیں گے وہ پاکستان کے ساتھ ہیں یا اسٹیبشلمنٹ کے ساتھ ہیں