سکھر ،ْبیٹوں نے تشدد کے بعد بوڑھی ماں کو کچرے کے ڈھیر پر چھوڑ دیا

ایس ایس پی سکھر کا واقعے کا نوٹس لے کر بیٹوں کو گرفتار ،ْ اپنے خرچ پر بوڑھی خاتوں کے علاج کا اعلان

اتوار مئی 15:10

سکھر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 مئی2018ء) سکھر میں سنگدل بیٹوں نے بوڑھی ماں پر مبینہ طور پر تشدد کیا اور بعد میں والدہ کو بے ہوشی کی حالت میں کھلے آسمان تلے کچرے کے ڈھیر پر چھوڑ دیا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق بوڑھی خاتون کئی گھنٹے تک کچرے کے ڈھیر پر پڑی رہیں ،ْ لوگوں نے انہیں طبی امداد کے لیے سول ہسپتال پہنچایا، ایس ایس پی سکھر نے واقعے کا نوٹس لے کر بیٹوں کو گرفتار ،ْ اپنے خرچ پر بوڑھی خاتوں کے علاج کا اعلان کیا۔

واقعے کی تفصیلات کے حوالے سے بتایا گیا کہ سکھر کے علاقے بس ٹرمینل کے قریب ایک معمر خاتون کچرے کے ڈھیر میں پڑی ملیں جنہیں مقامی افراد نے سکھر کے سول ہسپتال پہنچایا۔ان افراد کے مطابق خاتون کئی گھنٹے سے نیم بے ہوشی کی حالت میں کھلے آسمان تلے پڑی ہوئی تھیں جبکہ خاتون کا کہنا تھا کہ اسے اس کے بچوں نے کسی بات پر تشدد کا نشانہ بنایا اور نیم بے ہوشی کی حالت میں کچرے کے ڈھیر میں پھینک کر فرارہوگئے۔

(جاری ہے)

معمر خاتون کا تعلق علاقے کی کوریجو برادری سے بتایا جاتا ہے جبکہ اس واقعے کی خبریں میڈیا پر نشر ہونے کے بعد سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) سکھر محمد امجد شیخ نے نوٹس لیا اور پولیس کو خاتون کے بیٹوں کی فوری گرفتاری کا حکم دیا، جس پر پولیس نے خاتون کے بیٹے بشیر کوریجو کو شکارپور کے علاقے گڑھی یاسین سے گرفتار کرلیا۔۔پولیس کی حراست میں بشیر کوریجو کے مطابق انہوں نے ماں پر تشدد نہیں کیا بلکہ وہ گھر سے خود نکل گئی تھی جنہیں کافی تلاش کیا گیا لیکن وہ انہیں نہیں ملیں۔

دوسری جانب ایس ایس پی سکھر کے حکم پر پولیس نے معمر خاتون کو سکھر کے سول ہسپتال سے بہتر علاج کے لیے نجی ہسپتال میں منتقل کیا اور خاتون کے علاج کے تمام اخراجات ایس ایس پی سکھر نے خود اٹھانے کا اعلان بھی کیا۔ایس ایس پی سکھر کا کہنا تھا کہ اس واقعے کے تمام ملزمان کو گرفتار کیا جائے گا اور ان کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے گا ادھر خاتون پر تشدد کی خبریں میڈیا پر نشر ہونے کے بعد بحریہ فاؤنڈیشن کے چیئرمین ملک ریاض نے بھی واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے اپنے ادارے کی ایک ٹیم کو کراچی سے سکھر پہنچنے کی ہدایت کی۔

مذکورہ ٹیم نے سکھر کے نجی ہسپتال میں داخل مذکورہ خاتون کا معائنہ کیا، اس موقع پر بحریہ ویلفیئر کے مینیجر محمد عارف نے بتایا کہ خاتون کو علاج کیلئے کراچی منتقل کیا جائے گا اور وہاں پر اس کا بہتر سے بہتر علاج کرایا جائیگا۔انہوں نے بتایا کہ علاج کے بعد بھی خاتون کو تنہا نہیں چھوڑا جائے گا وہ اب محفوظ ہاتھوں میں ہے، جس کے بعد معمرخاتون کو کراچی منتقل کرنے کی تیاریاں شروع کردی گئیں۔