کے ڈی اے اسکیم36 میں درجنوں ایکڑ اراضی پر قبضہ کرکے مختلف گوٹھ کے نام سے غیر قانونی پلاننگ کا انکشاف

غیر قانونی گوٹھ اسکیم36 میں غازی گوٹھ بلاک4 مغل ہزارہ گوٹھ بلاک6 شہباز گوٹھ قائم کیے گئے ہیں جبکہ نجی ادارے کی اراضی پر قائم عالم نگر میں غیر قانونی قبضوں کا سلسلہ بھی عروج پر ہے۔ رپورٹ

اتوار مئی 21:21

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 مئی2018ء) کراچی ڈیولپمنٹ اتھارٹی ( کے ڈی ای) کے بدعنوان افسران کی ملی بھگت سے کے ڈی اے اسکیم36 میں درجنوں ایکڑ اراضی پر قبضہ کرکے مختلف گوٹھ کے نام سے ان پر غیر قانونی پلاتنگ کی جا رہی ہے۔ اس بات کا انکشاف ایک حساس ادارے کی رپورٹ میں کیا گیا ہے۔ ذرائع نے کہا کہ حکام اس رپورٹ کی تصدیق کے بعد مزید کارروائی کے لیے نیب کینحوالے کریں گے تاکہ کرپٹ عناصر کے خلاف کارروائی کی جاسکے۔

رپورٹ کے مطابق غیر قانونی گوٹھ اسکیم36 میں غازی گوٹھ بلاک4 مغل ہزارہ گوٹھ بلاک6 شہباز گوٹھ قائم کیے گئے ہیں جبکہ نجی ادارے کی اراضی پر قائم عالم نگر میں غیر قانونی قبضوں کا سلسلہ بھی عروج پر ہے۔ رپورٹ کے مطابق ان گوٹھوں میں 100، 120 اور400 گز کے پلاٹ کاٹ کر جعلی دستاویزات کے ذریعے فروخت کیے جارہے ہیں۔

(جاری ہے)

اسی طرح گلستان جوہر بلاک 9،10 اور11 میں بھی مختلف رقبے کے پلاٹوں پر قبضے کرکے وہاں غیر قانونی تعمیرات کی جارہی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق کے ڈی اے لینڈ ڈپارٹمنٹ کے بدعنوان افسران کے ساتھ حکومت سندھ کی بااثر شخصیات اور بورڈ آف ریونیو کے کرپٹ عناصر بھی قبضہ مافیا کے ساتھ سرگرم ہیں۔ تاہم اس ضمن میں ڈائریکٹر جنرل کے ڈی اے سمیع صدیقی سے جب میڈیا نمائندوں نے رابطہ کیا تو انہوں نے کے ڈی اے کی حدود میں اراضی پر قبضہ مافیاز کی سرگرمیوں سے لاعلمی ظاہر کی۔#

متعلقہ عنوان :