چکوال،پنجاب بھر کی وکلاء برادری کا پارلیمنٹ کی طرف سے لیگل پریکٹس ایکٹ اور بار کونسل ایکٹ میں ترمیم کو مسترد کر دیا

پنجاب بار کونسل نے ترمیم کے خلاف احتجاج کا اعلان

اتوار مئی 22:50

چکوال(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 مئی2018ء) پنجاب بھر کی وکلاء برادری نے پارلیمنٹ کی طرف سے لیگل پریکٹس ایکٹ اور بار کونسل ایکٹ میں ترمیم کو مسترد کر دیا ہے اور پنجاب بار کونسل نے ترمیم کے خلاف احتجاج کا اعلان کر دیا ہے اور پنجاب بار کونسل کی کال پر پنجاب بھر کے وکلاء اٹھائیس مئی کو مکمل ھڑتال کریں گے اور اپنا بھرپور احتجاج ریکارڈ کروائیں گے۔

ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن چکوال کے صدر ملک ضیغم عباس ایڈووکیٹ۔جنرل سیکرٹری ملک زعفران زلفی ایڈووکیٹ۔نائب صدر کامران مقبول ایڈووکیٹ۔ میڈیا کوارڈینیٹر ملک محمد آصف ایڈووکیٹ۔

(جاری ہے)

سابق صدر خواجہ محمد اصغر ایڈووکیٹ۔سابق صدر چوہدری امجد حسن علی ایڈووکیٹ۔سابق صدر ملک عبدالجلیل ایڈووکیٹ۔ سابق جنرل سیکرٹری نثار اصغر ایڈووکیٹ۔ سابق جنرل سیکرٹری ملک اظہر حسین ایڈووکیٹ اور دیگر وکلائ نے بھی ترمیم کی مذمت کی ہے اور ترمیم کو مسترد کر دیا ہے ترمیم کے تحت بار کونسل کا الیکشن لڑنے کے لئے پریکٹس کی معیاد دس سال سے بڑھا کر پندرہ سال کر دی گئی ہے جس سے نوجوان وکلاء کے الیکشن میں حصہ لینے کے مواقع کم ہو جائیں گے اسی طرح ترمیم کے تحت موجودہ بار کونسلز کی معیاد میں ایک سال کی توسیع کر دی گئی ہے وکلاء نے تمام ترامیم کو مسترد کر دیا ہے