فاٹا کے صوبے میں انضمام کے باوجود خیبرپختونخوا ملک کا دوسرا بڑا صوبہ نہ بن سکے گا

پیر مئی 22:33

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 مئی2018ء) فاٹا کے صوبے میں انضمام کے باوجود خیبرپختونخوا ملک کا دوسرا بڑا صوبہ نہ بن سکے گا سندھ آبادی کے لحاظ سے ملک کا دوسرا بڑا صوبہ رہے گا جبکہ خیبر پختونخوا تیسرا صوبہ برقرار رہے گا صوبے کے انضمام سے قبل صوبے کی آبادی 3کروڑ پانچ لاکھ تھی فاٹا کی آبادی 50لاکھ ملا کر 3کروڑ 55لاکھ ہو جائیگی جبکہ سندھ میں موجودہ آبادی 4کروڑ 78لاکھ ہیں پنجاب 11کروڑ آبادی کے ساتھ سر فہرست ہیں قومی اسمبلی کی نشستیں 336او رخیبر پختونخوا اسمبلی کی نشستیں 48سے بڑھ کر 56ہو جائیگی بلوچستان کی نشستوں کی تعداد 20، سندھ کی 75اور اسلام آباد کی تین ہو نگی ۔

(جاری ہے)

فاٹا کی قومی اسمبلی سے بارہ نشستیں ختم ہو جائیگی 2018کے انتخابات میں فاٹا سے منتخب ہونے والے قومی اسمبلی کے ممبران پر اس کا اطلاق نہیں ہو گا سینٹ کے نشستوں کی تعداد 104سے کم ہو کر 96رہ جائیگی صوبائی اسمبلی کی نشستیں 145ہو جائیگی خیبر پختونخوا اسمبلی میں فاٹا کے علاقوں سے 16، خواتین کی 4اقلیتوں کی ایک نشست ہو گی ۔