خیبر پختونخوا میں آخری اجلاس کے روز بھی پانچ سالوںکی طرح کورم ٹوٹنے کی نذر ہوگیا

پیر مئی 22:33

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 مئی2018ء) خیبر پختونخوا میں آخری اجلاس کے روز بھی پانچ سالوںکی طرح کورم ٹوٹنے کی نذر ہوگیا۔خیبرپختونخوااسمبلی کااجلاس سپیکرکی عدم موجودگی میں پینل آف چیئرمین محمودجان کی زیرصدارت ڈیڑھ گھنٹے کی تاخیرسے شروع ہواتواجلاس کے آغاز پر ضیاء اللہ آفریدی نے کورم کی نشاندہی کی تین دفعہ گھنٹیاں بجائی گئیں اور اجلاس کو غیرمعینہ مدت تک کیلئے ملتوی کردیاگیاکیونکہ اس وقت ایوان میں صرف پندرہ اراکین موجود تھے جب کہ کورم کے لئے 28اراکین کی ضرورت ہوتی ہے ۔

(جاری ہے)

اجلاس کے اختتام سے قبل پینل آف چیئرمین محمودجان نے اختتامی دعامانگتے ہوئے کہاکہ اللہ ان لوگوں کو دوبارہ اسمبلی میں لائیں جو اس صوبے او رملک کے ساتھ مخلص ہیں اللہ کبھی بھی ان لوگوں کو منتخب نہ کریں جو اس صوبے اور ملک کے ساتھ مخلص نہیں۔۔اسمبلی ہال میں بعض اراکین نے شیم شیم کے نعرے بھی لگائے بعدازاں اسمبلی اجلاس غیرمعینہ مدت تک کیلئے ملتوی کردیاگیا۔

متعلقہ عنوان :