نیب کی کارروائیاں بھی بلدیہ غربی میں کرپشن پر نہ روک سکیں

1ماہ میں 4 میں سے صرف ایک زون میں سے کچرا اٹھانے کا بل24کروڑ روپے بنا ڈالا

پیر مئی 23:41

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 مئی2018ء) نیب کی کارروائیاں بھی بلدیہ غربی میں کرپشن پر نہ روک سکیں۔ 1ماہ میں 4 میں سے صرف ایک زون میں سے کچرا اٹھانے کا بل24کروڑ روپے بنا ڈالا۔ افسران نے کرپشن کی بندوق چلانے کے لئے سالڈ ویسٹ بورڈ کا کاندھا استعمال کرنا شروع کردیا۔ ذرائع کے مطابق سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ نے مارچ کے آخر میں ڈی ایم سی ویسٹ میں کام کا آغاز کیا۔

ویسٹ کے 4 میں سے 1بلدیہ زون میں کام شروع کیا گیا۔ کیماڑی،سائیٹ اور اورنگی زون میں آزمائشی طور پر کام کیا گیا۔ ماہ اپریل میں گاربیج لفٹنگ کا بل نام نہاد چائنیز کمپنی نے بنا کر بھیجا۔ کرپٹ افسران نے جزوی طور پر کچرا 1 زون سے اٹھایا اوربل پورے ضلع کا بنا ڈالا۔ چائنیز کمپنی کے اس بل کی تصدیق ڈائریکٹر سینی ٹیشن غربی زاہد اقبال نے کی۔

(جاری ہے)

ذرائع نے مزید بتایا کہ ممکنہ میگا کرپشن میں چائنیز کمپنی کے افسران کو بھی شامل کیا گیا ہے۔

اس کام کے لئے ایس ایس ڈبلیو ایم بی کے افسران کو بھی سبز باغ دکھا کر راضی کیا گیا۔ تمام کارروائی کو انتہائی خفیہ رکھا گیا۔ ایس ایس ڈبلیو ایم بی سے قبل کچرا اٹھانے،ایندھن اور ملازمین کی تنخواہ کا مجموعی بل کرپشن کے باوجود17سی18کروڑ بنتا تھا۔ ذرائع کے مطابق 24کروڑ کی حالیہ بلنگ میں ڈی ایم سی ویسٹ کے ملازمین کی تنخواہ شامل نہیں۔ غربی میں ایس ایس ڈبلیو ایم بی نے نام نہاد چائنیز کمپنی کو ٹھیکہ دیا۔

چائینیز کمپنی نے مقامی ٹھیکیدار گرداری لال کو ٹھیکہ در ٹھیکہ دے دیا۔ گرداری لال نے ڈائریکٹر سینی ٹیشن کی ملی بھگت سے کچرے کے نام پر مٹی اور ملبہ اٹھا کر بھاری بل بنائے۔ معاہدے کی رو سے گھر گھر سے کچرا کلیکشن،کچرا کنڈیوں کی صفائی کرنا تھی۔ سوئپنگ کا کام بھی معاہدے میں شامل تھا۔ مذکورہ تمام عمل پورے ضلعے میں فوری شروع کیا جاناتھا۔

مگر ایس ایس ڈبلیو ایم بھی صرف بلدیہ اور پھر سائیٹ زون میں کام کا آغاز کرسکا۔ ذرائع کے مطابق مذکورہ دونوں زون میں بھی معاہدے پر من وعن عمل نہ ہوسکا۔ نہ گھروں سے کچرا اٹھا نہ سوئپنگ ہوئی،کچرا کنڈیاں بدستور بھری ہوئی ہیں۔ چند مرکزی شاہراہوں کی سوئپنگ فوٹو سیشن کے لئے کرائی گئی۔ نمائشی سوئپنگ کے لئے بھی عملہ ڈی ایم سی ویسٹ کا استعمال ہورہا ہے۔ سائیٹ اور بلدیہ کے ڈمپنگ پوائنٹ میں کچرا جمع کرکے جلانا معمول بنا ہوا ہے ۔ بلدیہ غربی میں تعینات بیشتر افسران میگا کرپشن پر ہونے والی تحقیقات میں شامل ہیں۔ ان افسران کو عہدوں سے برطرف نہیں کیا گیا ہے۔ پرکشش عہدوں پر عدالتی حکم کے برخلاف تعینات افسران بدستور ٹیکنیکل انداز میں سرکاری فنڈز کی لوٹ مار میں مصروف ہیں۔

متعلقہ عنوان :