ایک مائنڈ سیٹ کہتا ہے کہ آپ کو سبق سکھائیں گے، مریم نواز

منگل مئی 13:49

ایک مائنڈ سیٹ کہتا ہے کہ آپ کو سبق سکھائیں گے، مریم نواز
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2018ء) سابق وزیراعظم اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے دعویٰ کیا ہے کہ مجھے عدالتوں میں اس مائنڈ سیٹ کی وجہ سے گھسیٹا جارہا ہے جو کہتا ہے کہ آپ کو سبق سکھائیں گے ،ْمیں کسی بدعنوانی ،ْ کرپشن میں ملوث نہیں رہی اور نہ ہی سرکاری عہدے پر فائز رہی ،ْنوازشریف کی بیٹی ہونا میرا قصور ہے ،ْ میرے والد حق پر ہیں ان کے ساتھ کھڑی ہوں ،ْ پاکستان میں ووٹ کی عزت پرکھنے والا ہر شخص محمد نوازشریف کے ساتھ کھڑا ہے ،ْ اللہ کی عدالت سب سے بڑی عدالت ہے جہاں واٹس اپ اور ثبوت نہیں چلتے ،ْاپنے باپ کا سر نہیں جھکنے دونگی ۔

منگل کو احتساب عدالت میں پیشی کے بعد پنجاب ہائوس میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے مریم نواز نے احتساب عدالت کی جانب فراہم کردہ 128 سوالات کے جوابات کا ذکر کیا جو انہوں نے 3 دن تک احتساب عدالت کے روبرو دیئے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ احتساب عدالت میں دیئے گئے سوالات کے جوابات کا دوسرا حصہ ان وجوہات پر مبنی تھا جس میں مقدمات میں الجھانے کے اسباب پر روشنی ڈالی گئی۔

انہوں نے بتایا کہ مجھے معلوم ہے کہ 70 سے زائد پیشیاں کیوں بھگت چکی ہوں اور آج تک یہ سلسلہ کیوں جاری ہے ،ْمجھے کینسر میں مبتلا ماں سے کیوں دور رکھا جارہا ہی مریم نواز نے کہا کہ میں کسی بدعنوانی ،ْ کرپشن میں ملوث نہیں رہی اور نہ ہی سرکاری عہدے پر فائز رہی جبکہ میرا قصور یہ ہے کہ میں محمد نواز شریف کی بیٹی ہوں اور اپنے والد کے ساتھ کھڑی ہوں اور انہیں حق بجانب سمجھتی ہوں۔

مریم نواز نے متعدد مرتبہ اپنے خلاف دائرمقدمات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے معلوم ہے کہ مجھے ریفرنس میں الجھانے کی وجہ یہ کہ نواز شریف پر دباؤ ڈالا جائے۔انہوں نے کہا کہ منصوبہ سازوں نے پلاننگ کی کہ نوازشریف کو جھکانے کیلئے ان کی بیٹی کو عدالت اور کچہریوں میں گھسیٹا جائے۔۔مریم نواز نے کہا کہ میرے والد 70 سال کی بیماریوں کو ختم کرنے کیلئے عوام کی حاکمیت، حقوق، ووٹ کو عزت دو کا پرچم لے کر میدان میں نکلے ہیں۔

مریم نواز نے کہا کہ پاکستان میں ووٹ کی عزت پرکھنے والا ہر شخص محمد نوازشریف کے ساتھ کھڑا ہے، میں اس پاکستان کی بیٹی ہوں جسے دنیا کے سامنے تماشہ بنا کر رکھ دیا گیا ہے۔۔مریم نواز نے کہاکہ ہمارے دین، روایات اور معاشرے میں بیٹیاں سب کی سانجھی ہوتی ہیں لیکن آج یہ روایات سیاسی انتقام کی بھینٹ چڑھا دی گئی، آج کا دستور یہ ہے کہ بیٹی کو باپ کی کمزوری بنا کر پیش کرو۔

مریم نواز نے سابق وزیراعظم اور اپنے والد نوازشریف کی کارکردگی پر بات کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے پاکستان کے دفاع کا ناقابل تسخیر بنایا، ملک میں موٹر وے کی شاہرواں کا جال پھیلایا، بلوچستان سے دہشت گرد عناصر کا خاتمہ کیا، کراچی کی رونقیں بحال کیں، دیوالیہ ہونے والی معیشت کو کھڑا کیا، بے روزگاری ختم کی، 19 سال بعد مردم شماری کرائی ، فاٹا کو قومی دھارے میں شامل کیا، بجلی کی پیداوار میں 10 ہزار میگا واٹ کا اضافہ کیا، سی پیک منصوبوں کی مد میں اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری دی، عوام کو امید کی روشنی دی اور پہلی مرتبہ ایک آمر کو قانون کے شکنجے میں لا کھڑا کیا۔

انہوں نے کہا کہ اللہ کی عدالت سب سے بڑی عدالت ہے جہاں واٹس اپ اور ثبوت نہیں چلتے ،ْمجھے یقین ہے کہ عدالت میں بیٹھے جج فیصلہ سناتے وقت اس بڑی عدالت کو یاد رکھیں گے۔۔مریم نواز نے کہا کہ وہ ہر سزا بھگتنے کے لیے تیار ہیں اور ایمان ہے سب سے بڑی عدالت اللہ کی عدالت ہے اور وہ اپنے والد کا سر جھکنے دیں گی اور نہ غیرت مند پاکستانیوں کا۔