پاکستانی دریائوں کا پانی روک کر بھارت میں ڈیموں کی تعمیر ملکی معیشت کے نقصان دہ ہے ‘ خادم حسین

آبی بحران کے خاتمہ کے لیے کالا باغ ڈیم سمیت دیگرڈیموں کی تعمیر کا فوری آغاز کیا جائے، پانی کی کمی سے زراعت اور صنعت دونوں متاثر ہونگے،حکومت کشن گنگاڈیم پرسخت موقف اپنائے‘سینئر نائب صدر فیروز پور بور ڈلاہور

منگل مئی 13:54

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2018ء) پاکستان سٹون ڈویلپمنٹ کمپنی کے بور ڈ آف ڈائریکٹرز کے رکن و سینئر نائب صدر فیروز پور روڈ لاہور خادم حسین نے بھارت کی جانب سے پاکستانی دریائوں کا پانی روک کر کشن گنگا ڈیم کی تعمیر پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی دریائوں کا پانی روک کر بھارت میں ڈیموں کی تعمیر ملکی معیشت کیلئے نقصان دہ ہے ،،پاکستان میں آبپاشی کے لیے پانی کی قلت میں خطرناک حد تک اضافہ ہوگیا ہے پانی کے ذخائرمیں صرف2لاکھ20ہزار ایکڑ فٹ پانی رہ گیا ہے۔

جبکہ مجموعی قلت 49فیصد سے تجاو ز کرگئی ہے اور پنجاب اور سندھ کو51،51فیصدپانی کی کمی کا سامنا ہے ۔ان خیالات کااظہار انہوںنے فیروز پور بورڈ کے تاجروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

خادم حسین نے کہا کہ آبی بحران کے خاتمہ کیلئے کالا باغ ڈیم سمیت دیگر ڈیموں کی تعمیر کا فوری آغاز کیا جائے اور پانی کے بحران سے نمٹنے اور مستقبل میں پانی کی ضروریات کیلئے ابھی سے منصوبہ بندی کی جائے۔

انہوںنے کہا کہ پانی ہماری زندگی ہے پانی کی کمی سے نہ تو زراعت ممکن ہے اور نہ ہی سستی بجلی پیدا ہوسکتی ہے پانی کی کمی سے زراعت و صنعت دونوں متاثر ہونگے اس لیے حکومت کشن گنگا ڈیم اور چنا ب کا پانی روک کر بگہیار ڈیم پر سخت موقع اپنانے کے ساتھ ساتھ ملک میں پانی کے ذخیرہ کے لیے ڈیموں کی تعمیر کا آغاز کرے اگر ایسا نہ کیا گیا تو بحران مزید شدت اختیار کرجائے گا جس سے زراعت متاثر ہوگی اور صنعتوں کو خام مال دستیاب نہ ہونے سے ملکی معیشت تباہ ہوجائے گی۔