مذہبی ہم آہنگی کی مثال، سری نگر میں ایک سکھ نے مسلمانوں کو سحری میں جگانے کا بیڑا اٴْٹھا لیا

’’اللہ کے رسولؐ کے پیارو… جنت کے طلبگارو ، اٴْٹھو اور روزہ رکھو‘‘ سکھ کی ڈھول بجاتے اور مسلمانوں کو سحری کے لیے جگانے کی ویڈیو وائرل

منگل مئی 17:35

سری نگر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2018ء) یوں تو بھارت میں مسلمانوں کے خلاف نفرت پھیلانے والوں کی کمی نہیں ہے لیکن حال ہی میں ماہ رمضان کے موقع پر بھارت میں مذہبی ہم آہنگی بھی دیکھنے میں آئی ہے جو قابل تعریف ہے۔ سوشل میڈیا پر ایک سکھ بزرگ کی ویڈیو وائرل ہوئی جو روز صبح ڈھول بجا کر مسلمانوں کو سحری کے لیے جگاتا ہے۔ سوشل میڈیا پروائرل ہوئے 21 منٹ کے اس ویڈیو کلپ میں مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوانہ میں مسلمان پڑوسیوں کو ڈھول بجا بجا کر سحری میں جگاتا ہے۔

ڈھول بجانے سے پہلے یہ سکھ بزرگ اپنے آواز میں کہتا ہے کہ ''اللہ کے رسولؐ کے پیارو، جنت کے طلبگارو ، اٴْٹھو اور روزہ رکھو۔ اس ویڈیو کے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے پر صارفین نے سکھ بزرگ کی جانب سے مذہبی آہنگی کی قائم کی گئی اس مثال کو خوب سراہا۔

(جاری ہے)

سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ رمضان المبارک میں سحر کے اوقات میں مسلمانوں کو جگانے کے لیے ڈھول بجانے والے آتے تھے لیکن ایسا پہلی مرتبہ دیکھنے میں آیا ہے کہ کوئی غیر مسلم بھی اس کام کو بے حد لگن اور پیار سے کر رہا ہے۔

بلاشبہ یہ مذہبی ہم آہنگی کی ایک شاندار مثال ہے۔ یاد رہے کہ تہار جیل میں قید 59 ہندو قیدیوں نے بھی اپنے 2 ہزار 299 مسلمان ساتھی قیدیوں کے ساتھ ماہ رمضان میں روزے رکھنا شروع کر دئے ہیں۔ ہندو قیدیوں کا کہنا ہے کہ مذاہب مختلف ہونے کے باوجود ہماری روزے رکھنے کی اپنی وجہ ہے۔ جیل حکام کا کہنا ہے کہ نئی دہلی میں درجہ حرارت میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔