بلجیئم، کراس فائرنگ میں 2پولیس اہلکاروں سمیت 4افراد ہلاک، ایک عورت یر غمال

منگل مئی 23:28

برسلز(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2018ء) بیلجیم میں کراس فائرنگ میں 2پولیس اہلکاروں سمیت 4افراد ہلاک ہو گئے جب کہ ایک عورت کو یر غمال بنا لیا گیا۔بین الاقوامی میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ بیلیجیم کے شہر لیژ میں فائرنگ کے واقعے میں کم از کم 4 افراد ہلاک ہو گئے جن میں دو پولیس افسران اور ایک حملہ آور شامل ہے۔بیلجیم ریڈیو اور ٹیلی وژن کی فرانسیسی زبان کی ویب سائٹ کے مطابق منگل کو ملک کے مشرقی شہر لیژ کے وسطی حصے میں ایک شخص نے فائرنگ کر کے دو پولیس اہل کاروں کو ہلاک کر دیا۔

مذکورہ شخص نے ایک عورت کو یرغمال بھی بنا لیا تھا۔ بعد ازاں یہ حملہ آور بھی فائرنگ کا نشانہ بن کر اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔۔حملہ آور نے ایک کیفے کے نزدیک پولیس اہل کاروں پر فائرنگ کی اور پھر فرار ہو کر ایک اسکول میں پناہ لے لی۔

(جاری ہے)

اس دوران اس نے اسکول کی صفائی کرنے والی ایک خاتون کو یرغمال بنا لیا البتہ بعد ازاں پولیس حملہ آور کو ہلاک کرنے میں کامیاب ہو گئی۔

العربیہ کے نمائندے کے مطابق بیلجیم کی پولیس نے مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے دس بجے حملہ آور کی فائرنگ سے سکیورٹی فورسز کے دو اہل کاروں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔موصولہ معلومات میں اس امکان کا اظہار کیا گیا ہے کہ فائرنگ کی زد میں آ کر ایک شہری بھی اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا جو اس وقت اپنی گاڑی میں سوار تھا۔لیژ شہر اپنے صنعتی زونز کے حوالے سے مشہور ہے۔ گزشتہ دہائیوں میں یہاں واقع صنعتی کمپنیوں کے دیوالیہ ہونے سے شہر کو بڑا دھچکا لگا۔لیژ کا شمار ان شہروں میں ہوتا ہے جہاں جرائم پیشہ تنظیمیں اور ہتھیاروں کی اسمگلنگ سرگرم ہے۔