لاہور ، نواز لیگ کا غرور اور تکبر خاک میں مل چکاہے، اعجازاحمدچوہدری

نواز شریف کی محاذ آرائی عام انتخابات کو خطرے میں ڈالنے کی سازش ہے ، قوم کرپشن اور اقربا پروری سے پاک عوام دوست جمہوریت چاہتی ہے، اربوں روپے کی دیہاڑیاں لگانے اور کمیشن مافیا کو سیاست سے نکالنا ہوگا، سینئر مرکز ی رہنماء پاکستان تحریک انصاف

منگل مئی 23:36

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2018ء) پاکستان تحریک انصاف کے سینئر مرکز ی رہنما اعجازاحمدچوہدری نے کہاہے کہ نواز لیگ کا غرور اور تکبر خاک میں مل چکاہے،،نواز شریف کی محاذ آرائی عام انتخابات کو خطرے میں ڈالنے کی سازش ہے ، قوم کرپشن اور اقربا پروری سے پاک عوام دوست جمہوریت چاہتی ہے، اربوں روپے کی دیہاڑیاں لگانے اور کمیشن مافیا کو سیاست سے نکالنا ہوگا۔

انہوںنے کہاکہ پی ٹی آئی آئندہ انتخابات میں بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل کرے گی، آنیوالی حکومت تحر یک انصاف کی ہوگی اور عمران خان کو وزیر اعظم بننے سے دنیا کی کوئی طاقت نہیں روک سکتی کیونکہ قوم تبدیلی کے حق میں فیصلہ سنا چکی ہے، نواز شریف اور ان کے حواری پاکستان کے اداروں کو دھمکیاں دے رہے ہیں مگر ان کے تمام عزائم ناکام ہوں گے اوراس میں کوئی شک نہیں کہ عوام اب ملک دشمنوں کو ہر محاذپر نشانہ عبر ت بنادیں گے۔

(جاری ہے)

وہ گزشتہ روز این اے 133کے علاقہ بہار کالونی میں ایم پی اے شنیلاروت کے گھر پر مسیحی مستحق افراد میں امدادی چیک تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کررہے تھے ۔ انہوںنے کہا کہ ن لیگ شریف خاندان سے حساب نہ مانگنے کو ہی جمہوریت سمجھتی ہے اور نواز شریف سمجھتے ہیں کہ وہ نہیں تو ملک اور جمہوریت بھی نہیں،،شریف برادران کی سیاست کا واحد مقصد دولت سازی ہے،سیاست کو چوروں اور ڈاکوؤں سے پاک کرنے کا وقت آ گیا ہے،سیاست کو کرپشن کی نجاست سے پاک نہ کیاگیاتو آنے والی نسلیں کبھی معاف نہیں کریں گی۔

انہوں نے کہاکہ ن لیگ کی سیاست کا خاتمہ ہو چکا ، قوم کو گروی رکھنے والے شریف برادران سے عوام کوئی امید نہ رکھے ان کا اقتدارمیں آنے کا ایک ہی مقصد صرف لوٹ مارکرنا ہے یہ صرف پاکستان کولوٹنے کیلئے اقتدارمیں آتے ہیں،،پاکستان میں پار لیمنٹ اور جمہوریت تب ہی مضبوط ہوگی جبکہ ملک میں سیاستدان اقتدار میں آکر اپنی جیب بھر نے کی بجائے ملک اور قوم کی خدمت کر یں گے مگر بدقسمتی سے قیام پاکستان کے بعدسے اقتدار میں آنیوالوں نے ملک میں لوٹ مار کے سواکچھ نہیں کیا جسکی وجہ سے آج جمہوریت اور پار لیمنٹ کمزور ہے۔