وفاقی و صوبائی حکومتوں کا اپنی مدت پوری کرنا جمہوریت کے لیے نیک شگون ہے‘سراج الحق

حکومت نے پانچ سال کی مدت تو پوری کرلی مگر عوام سے کیا گیا کوئی ایک بھی وعدہ پورا نہیں کرسکی‘امیر جماعت سلامی

منگل مئی 23:41

وفاقی و صوبائی حکومتوں کا اپنی مدت پوری کرنا جمہوریت کے لیے نیک شگون ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2018ء) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ وفاقی و صوبائی حکومتوں کا اپنی مدت پوری کرنا جمہوریت کے لیے نیک شگون ہے،خراب کارکردگی پر عوام خود احتساب کریں گے۔حکومت نے پانچ سال کی مدت تو پوری کرلی مگر عوام سے کیا گیا کوئی ایک بھی وعدہ پورا نہیں کرسکی،حکومتیں عام آدمی کی زندگی میں کوئی انقلاب نہیں لاسکیں۔

اشرافیہ کے بینک بیلنس ،شوگر ملوں،بنگلوںاور پراپرٹیز میں اضافہ ہوا ہے لیکن عام آدمی کی ترقی کی سوئی اُسی جگہ کھڑی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے سائبان کی طرف سے اپنے اعزاز میں دیئے گئے گرینڈ افطار ڈنر کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ افطار ڈنر میں تاجر تنظیموں کے نمائندوں اور بزنس کمیونٹی کے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

(جاری ہے)

اس موقع پر ڈپٹی سیکرٹری جنرل اظہر اقبال حسن،ترجمان جماعت اسلامی امیر العظیم،محمد اعظم چیمہ اور ملک شمشیر حسین بھی موجود تھے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جمہوری رویوںکے فروغ سے ہی ملک میں جمہوریت مستحکم ہوسکتی ہے۔چاروں صوبوں میں مختلف حکومتیں ہونے کی وجہ سے ملک میں سیاسی ہم آہنگی نہیں رہی۔ ویلفیئر پاکستان کے ہدف کی طرف حکومت ایک قدم نہیں بڑھ سکی۔عوام کے مسائل وہی ہیں جو 2013 ء یا اس سے پہلے تھے۔لوڈ شیڈنگ اُسی طرح جاری ہے۔حکومت نے اپنے دور میں تاریخی قرضے لے کر قوم کے مستقبل کو گروی رکھ دیا ہے اور ہر پاکستانی ایک لاکھ 30ہزار روپے کا مقروض ہے۔

ایک طرف قوم کا بال بال قرضے میں جکڑا ہوا ہے اور دوسری طرح حکومت نئے قرضوں کی تلاش میں ہے۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ بھارت پاکستان کے خلاف آبی جارحیت کررہا ہے اور متنازع ڈیم بنا کر پاکستان کے حصے کا پانی اپنی طرف موڑرہا ہے ۔پہلے راوی اور ستلج میں کبھی کبھار پانی دیکھنے کو مل جاتا تھا اب تو دونوں دریائوں میں بچوں نے کرکٹ کھیلنا شروع کردی ہے۔

پاکستان پانی کے بہت بڑے بحران سے دوچار ہونے والا ہے۔دریائے چناب اور جہلم کا پانی بھی کم ہوگیا ہے اگر فوری طور پر نئے آبی ذخائز تعمیر نہ کیے گئے اور بھارت کی آبی دہشتگردی کو روکا نہ گیا تو آنے والے چند سالوں میں ملک میںخشک سالی کا خطرہ ہے جس سے نہ صرف زراعت بری طرح تباہ ہو گی بلکہ صنعت اور تجارت بھی شدید متاثرہوگی۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ مسلم لیگ کی حکومت اپنی مدت پوری کرکے رخصت ہوگئی ہے مگر پیپلز پارٹی کی حکومت کی طرح قوم کی بیٹی عافیہ صدیقی کو رہا کرانے کے لیے اس حکومت نے بھی کوئی سنجیدہ کوشش نہیں کی۔بہتر ہوتا حکومت اپنے وعدوں کے مطابق ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کے لیے کوئی ایک سنجیدہ کوشش اپنے کھاتے میں ڈال کررخصت ہوتی۔