جدید ربوٹس سے چیزوں کو الگ الگ کرنے کے دورانیہ میں کمی

بدھ مئی 13:00

جدید ربوٹس سے چیزوں کو الگ الگ کرنے کے دورانیہ میں کمی
ٹوکیو ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) جاپان کے بڑے برقی مصنوعات ساز ادارے ہِٹاچی نے اشیاء کی تقسیم کے مراکز کے لئے روبوٹ کے ذریعے چیزوں کو الگ لگ کرنے کا ایک نیا نظام متعارف کرادیا۔ جاپان کے ذرائع ابلاغ کے مطابق ہِٹاچی کمپنی نے چیزوں کو الگ الگ کرنے کے ربوٹک نظام کو متعارف کرایا ہے جس نے کثیر طرز کی مصنوعی ذہانت کو قابل استعمال بنا کرکام کرنے کے دورانیے کو کم کر دیا ہے۔

(جاری ہے)

اشیاء کا ڈبّوں میں معائنہ کرنے کے لئے یہ نظام خودکار ٹرالیوں، کیمروں اور ایسے روبوٹس پر مشتمل ہے جو چیزوں کو ڈبّوں سے نکالتے ہیں اور اٴْنہیں الگ الگ کرتے ہیں۔تمام ٹرالیوں، کیمروں اور روبوٹس میں مصنوعی ذہانت نصب ہے جو ہموار اور مربوط عملی سرگرمیاں انجام دیتی ہیں۔ ماہرین کے مطابق پٴْرانے خٴْود کار نظاموں میں ٹرالیوں کو رٴْکنا پڑتا تھا تاکہ روبوٹس اشیاء اٴْتار سکیں اور اٴْنہیں اقسام کے مطابق ترتیب دے سکیں تاہم مزکورہ نئے نظام میں روبوٹس چیزوں کو گھومتی ہوئی ٹرالیوں پر سے ڈبّوں سے باہر نکال سکتے ہیں، اٴْنہیں الگ کرسکتے ہیں اور اٴْنہیں طاق یا شیلف میں رکھ سکتے ہیں۔ اِس سے عملی سرگرمی کے وقت میں 38 فیصد تک کی کمی ہوئی ہے۔

متعلقہ عنوان :