اندرون سندھ اور کراچی کے عوام صوبے کے حکمرانوں کے احتساب کے لئے تیار ہوجائیں، علی اکبرگجر

سند ھ کے عوام کو دس سالوں کی کرپشن اور اندھیروں سے نجات ملنے پر مبارکباد پیش کرتے ہیں، نائب صدر مسلم لیگ (ن) سندھ

بدھ مئی 16:31

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ(ن) سندھ کے نائب صدر کراچی سے قومی اسمبلی کے حلقے NA-249 سے مسلم لیگ(ن) کے قائد میاں محمدنواز شریف کی طرف سے متوقع امیدوار علی اکبر گجر نے سندھ کے عوام کو دس سال سے مسلط بد عنوان اور کرپٹ حکمرانوں سے نجات پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ کو بالآخر آگ اور خون کے سوداگروں کے سیاہ دور سے نجات مل گئی ۔

(جاری ہے)

امید ہے کہ سندھ کے عوام پر ماضی کے سیاہ ترین دس سالوں کا سایہ دوبارہ نہیں پڑنے دیا جائے گا․ سندھ کے عوام کو امن و امن اور بنیادی انسانی ضروریات سے محروم رکھ کر اپنے دوستوں اور خاندانوں کو نوازنے والے سندھ کے حکمران ٹولے کا احتساب اب عوام کے ووٹ کی قوت سے کیا جائے گا․ دس سالوں سے سندھ کے وسائل کو نوچنے والے دو جماعتی حکمران اتحاد نے کراچی سے کشمور تک سندھ کے عوام کے ساتھ غلام قوموں جیسا سلوک روا رکھا․ کراچی کے شہری بوند بوند پانی کو ترس رہے ہیںلیکن دونوں حکمران جماعتوں کے ساجھے دار دوبئی ملائشیا اور سنگاپور سے درآمدہ پانی پی رہے ہیں․ اندرون سندھ کے شہریوں کی زرعی زمینیں بنجر بنا کر سندھ کے حکمران ٹولے نے دیہی علاقوں کے رہنے والوں کو نئی ہجرت پر مجبور کر دیا ہی․ پاکستان مسلم لیگ(ن) ہی موجودہ حالات میں صوبے کے عوام کے مسائل کا واحد حل ہی․ پاکستان مسلم لیگ(ن) کے صوبائی نائب صدر علی اکبر گجر نے کہا کہ اندرون سندھ اور کراچی کے عوام صوبے کے حکمرانوں کے احتساب کے لئے تیار ہوجائیں․ حکمرانوںقائد نواز شریف کی رہنمائی میں سندھ کے عوام کو محفوظ اور صوبے کومعاشی استحکام دیں گی․سند ھ کے عوام کو دس سالوں کی کرپشن اور اندھیروں سے نجات ملنے پر مبارکباد پیش کرتے ہیں․ پاکستان مسلم لیگ(ن) کا ساتھ دے کر سندھ کے عوام خوان کے سوداگروں کو دوبارہ مسلط ہونے سے روکیں․ پاکستان مسلم لیگ(ن) نے جس بہادری اور عزم کے ساتھ کراچی میں لاشوں کا کاروبار روکا عوام کے تعاون کے ساتھ ان شا اللہ ہم میاں محمد نواز شریف کی قیادت کراچی کے عوام کو پانی،،،بجلی اور بلدیاتی مسائل سے اسی طرح نجات دلائیں گے جس طرح ہماری قیادت نے اس شہر کو لاشوں ہڑتالوں اور بھتوں سے نجات دلائی ہی․