پاکستانی سائنسدان پروفیسر عطا الرحمن کے لیے چین کی جانب سے بین الاقوامی اعزاز

بدھ مئی 16:31

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) معروف پاکستانی سائنسدان، سابق وفاقی وزیر برائے سائنس اور ٹیکنالوجی،، سابق سربراہ اعلی تعلیمی کمیشن پاکستان پروفیسر ڈاکٹر عطا الرحمن کو چائنیز اکیڈمی آف سائنسز (سی اے ایس)نے بطور سی اے ایس اکیڈمیشن شامل کیا ہے، پروفیسر عطا الرحمن مسلم دنیا کے پہلے سائنسدان ہیں جسے چین کی جانب سے یہ بین الاقوامی اعزاز حاصل ہوا ہے۔

بین الاقوامی مرکز برائے کیمیائی و حیاتیاتی علوم((آئی سی سی بی ایس)جامعہ کراچی کے ایک سینئرآفیشل نے کہا ہے کہ پروفیسر عطا الرحمن کو یہ اعزاز 28 مئی کو چین میں چینی صدر جناب زی جن پنگ کی زیر صدارت منعقدہ چائنیز اکیڈمی آف سائنسز کی انیسویں اور چائنیز اکیڈمی آف اینجنئرنگ کی 14 ویں جنرل اسمبلی کے اجلاس میں عطا کیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

آئی سی سی بی ایس جامعہ کراچی کے آفیشل کے مطابق اسی تقریب میں نوبل انعام یافتہ سابق صدر رائل سوسائٹی (لندن) سر پال نرس کو بھی بطور سی اے ایس اکیڈمیشن شامل کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ انھوں نے 1968 میں کیمبرج یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کی سند حاصل کی، پروفیسر عطا الرحمن نے نیچرل پروڈکٹ کیمسٹری کے شعبے میں گراں قدر خدمات انجام دی ہیں، اس ضمن میں انکی 1122 سے زیادہ بین الاقوامی اشاعتیں، نامیاتی و غیر نامیاتی کیمیا، این ایم آر اسپیکٹرواسکوپی اور نیچرل پروڈکٹ کیمسٹری کے موضوعات پر امریکہ،، یورپ اور جاپان میں طباعت شدہ 245کتب اور بین الاقوامی سائنسی جرائد میں 764 سے زیادہ تحقیقی اشاعتیں قابل ذکر ہیں، 70 اسباق دیگر کتب میں شامل ہیں جبکہ 43 پیٹنٹ بھی ان کے نام ہیں، انھیں مسلم دنیا سے پہلی مرتبہ 1999 یونیسکو ایوارڈ کے لیے منتخب کیا گیا، 2006 میں انھیں فیلو آف رائل سوسائٹی (لندن)کا اعزاز حاصل ہوا، اس کے علاوہ درجنوں بین الاقوامی اعزازات ان کے نام ہوئے ہیں، پروفیسر عطا الرحمن کو نہ صرف متعدد بین الاقوامی ایوارڈ حاصل ہوئے ہیں بلکہ حکومتِ پاکستان کی جانب سے انھیں تمغہء امتیاز، ستارہء امتیاز، ہلالِ امتیاز اور نشانِ امتیاز بھی عطا کیا جاچکا ہے