کراچی ،تمام تر سہولیات سے آراستہ علاقے بھی کچی آبادی قرار دیئے جانے کے باعث شہر کا 70فیصد رقبہ کچی آبادیوں پر مشتمل قرار

بدھ مئی 17:39

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) کراچی میں تمام تر سہولیات سے آراستہ علاقے بھی کچی آبادی قرار دیئے جانے کے باعث شہر کا 70فیصد رقبہ کچی آبادیوں پر مشتمل قرار دیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

شہر قائد کا حیرت انگیز امر سامنے آگیا ہے، تمام تر سہولیات سے آراستہ علاقے بھی کچی آبادی قرار دے دیئے گئے، شہرکی 70 فیصد آبادی، کچی آبادیاں کہلاتی ہیں،، جبکہ کچی ابادی یا گوٹھ وہ آبادیاں تھیں جہاں شہری سہولیات کا فقدان پایا جاتا تھا ،،،کراچی میں موجود کچی آبادیاں تمام سہولیات سے آراستہ ہونے کے باوجود کچی آبادیاں ہی کہلاتی ہیں ،، تاہم سندھ کچی آبادی کا محکمہ وقفے وقفے سے کراچی میں کچی آبادیوں کو نوٹیفائیڈ کرنے میں مصروف ہے ،،کچی آبادی کو نوٹیفائیڈ کرنے سے پہلے اس کے محل وقوع کا جائزہ لیا جانا ضروری ہے ،،جو کچی آبادیاں تمام شہری سہولیات رکھتی ہیں وہ کچی آبادیاں کہلانے کا حق نہیں رکھتیں،، شہر میں کچی آبادیوں کے جامع نیٹ ورک نے شہری و دیہی علاقوں میں تفریق ختم کر رکھی ہے ،،شہر کی کچھ ہی کچی آبادیاں ایسی ہیں جہاں کچھ شہری سہولیات موجود نہیں ہیں ،، جبکہ اخترکالونی سے اعظم بستی تک کی آبادیاں بھی اب کچی آبادی کہلانے کی حق دار نہیں ہیں ،،2009تک یہاں پانی و سیوریج کانظام واٹر بورڈ کے ماتحت نہیں تھا ،، تاہم 2009میں واٹر بورڈ نے مذکورہ آبادیوں میں بھی اپنا نیٹ ورک قائم کر دیا ہے،، مکمل سہولیات سے آراستہ کچی آبادیوں کو کچی آبادی کے بجائے شہری آبادی بھی ڈیکلئیر کرنا چاہئے۔

متعلقہ عنوان :