بلوچستان کی ترقی پاکستان کی ترقی ہے، بلوچستان سب سے خوشحال صوبہ بننے کی صلاحیت رکھتا ہے،

مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے بے مثال ترقیاتی منصوبے شروع کئے ، انہیں پایہ تکمیل تک بھی پہنچایا، امید ہے کہ مستقبل کی حکومتیں ترقی کے جاری عمل کو مزید آگے بڑھائیں گی، پاکستان کی ترقی جمہوری سفر پر گامزن رہنے میں مضمر ہے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا کوئٹہ انٹرنیشنل ایئرپورٹ توسیع اور تزئین و آرائش منصوبہ کی افتتاحی تقریب سے خطاب

بدھ مئی 18:06

بلوچستان کی ترقی پاکستان کی ترقی ہے، بلوچستان سب سے خوشحال صوبہ بننے ..
کوئٹہ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے بلوچستان کی ترقی کو پاکستان کی ترقی قرار دیتے ہوئے اس یقین کا اظہار کیا ہے کہ بلوچستان سب سے خوشحال صوبہ بننے کی صلاحیت رکھتا ہے، مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے بے مثال ترقیاتی منصوبے نہ صرف شروع کئے بلکہ انہیں پایہ تکمیل تک بھی پہنچایا، امید ہے کہ مستقبل کی حکومتیں ترقی کے جاری عمل کو مزید آگے بڑھائیں گی، پاکستان کی ترقی جمہوری سفر پر گامزن رہنے میں مضمر ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو کوئٹہ انٹرنیشنل ایئرپورٹ کی توسیع اور تزئین و آرائش کے منصوبہ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ 2013ء میں برسر اقتدار آئے تو ہم نے پاکستان کے تمام ایئرپورٹس کو جدید خطوط پر استوار کرنے کا فیصلہ کیا، آج 2 ارب روپے کی لاگت سے کوئٹہ ایئرپورٹ کی توسیع کا کام مکمل ہو چکا ہے جس سے کوئٹہ ایئرپورٹ پر اب 777 طیارے بھی لینڈ کر سکیں گے، یہ ایئرپورٹ بلوچستان کی ترقی میں اہم کردار ادا کرے گا اور عوام کو سہولت ملے گی۔

(جاری ہے)

وزیراعظم نے گورنربلوچستان ، وزیراعلیٰ بلوچستان،، وزیراعظم کے مشیر برائے ہوا بازی سردار مہتاب عباسی اور سی اے اے ٹیم کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یہ سہولت یہاں کے عوام کا حق تھا اور اس کی ضرورت بھی تھی۔ انہوں نے کہا کہ اس منصوبہ میں تھوڑی سی تاخیر ضرور ہوئی لیکن ایک معیاری ایئرپورٹ آج یہاں موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہی نہیں بلکہ اسلام آباد میں بھی ایک جدید ایئرپورٹ کا افتتاح کیا گیا ہے جس کو بنانے میں 12 سال لگے، لاہور ایئرپورٹ کی توسیع اور کراچی ایئرپورٹ کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے ساتھ ساتھ ملتان اور پشاور کے ایئرپورٹس کو بھی توسیع دی گئی، سیالکوٹ ایئرپورٹ توسیعی منصوبہ کی وجہ سے بین الاقوامی پروازیں شروع ہو چکی ہیں اور کارگو جہازوں کی بھی آمدورفت ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کوئٹہ میں بھی غیر ملکی پروازیں آئیں گی اور پرائیویٹ ایئر لائنز بھی اپنے آپریشنز کو بڑھائیں گی۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہماری حکومت کا یہ خاصہ اور نواز شریف کا یہ وژن ہے کہ ہم نے جو بھی ترقیاتی منصوبے شروع کئے انہیں مکمل بھی کیا۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کی ترقی پاکستان کی ترقی ہے، بلوچستان میں امن آ چکا ہے، اب صرف ترقی کیلئے کام کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ترقی کیلئے مواصلات اور روابط کو بنیادی حیثیت حاصل ہے، مغربی کوریڈور گوادر تک رسائی فراہم کرے گا، وسطی ایشیائی ریاستوں، چین کو دیگر علاقوں تک رسائی ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ موٹرویز اور شاہرات کے نیٹ ورک کے ذریعے ملک کے مختلف علاقوں کو باہم منسلک کیا جا رہا ہے، ملک بھر میں 1700 کلومیٹر طویل موٹرویز تعمیر کئے جا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مغربی کوریڈور بلوچستان کی ترقی میں سنگ میل ثابت ہو گا جبکہ سی پیک منصوبوں کی تکمیل سے علاقائی اور عالمی روابط کو فروغ ملے گا۔ وزیراعظم نے کہا کہ مواصلاتی رابطوں کے حوالہ سے بلوچستان میں ایک انقلاب برپا ہوا ہے اس سے ترقی ہو گی، سی پیک کے تحت وسط ایشیاء کو ریل نیٹ ورک سے منسلک کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ صوبہ میں ترقی کیلئے بلوچستان کو اپنے معدنی وسائل پر انحصار کرنا ہو گا، امید ہے کہ جہاں ہم ترقی کے سفر کو چھوڑ رہے ہیں مستقبل کی حکومتیں اس عمل کو وہیں سے آگے بڑھائیں گی اور اگر حکومتیں لگن سے کام کریں تو بلوچستان مزید ترقی کرے گا، پورا یقین ہے کہ بلوچستان پاکستان کا سب سے خوشحال صوبہ بننے کی صلاحیت رکھتا ہے، اس ضمن میں وفاق بھی مدد کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ صوبہ کی قیادت اور سیاسی جماعتیں اختلافات ختم کرکے بلوچستان کی ترقی کیلئے کام کریں، اس سے پاکستان بھی ترقی کرے گا۔ وزیراعظم نے عام انتخابات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ 25 جولائی کو فیصلہ کرنا ہے، اسی پر پاکستان آگے چلے گا، پاکستان کی ترقی جمہوری سفر پر گامزن رہنے میں مضمر ہے، ملکی ترقی و استحکام کیلئے عوام کی نمائندہ حکومت ناگزیر ہے۔ شاہد خاقان عباسی نے اس یقین کا اظہار کیا کہ 25 جولائی کو شفاف، منصفانہ اور غیر جانبدارانہ انتخابات منعقد ہوں گے اور پاکستان کے عوام اسے قبول کریں گے، اسی طرح جمہوریت اور ترقی کا سفر آگے بڑھے گا۔ قبل ازیں کوئٹہ آمد پر گورنر بلوچستان محمد خان اچکزئی نے وزیراعظم کا استقبال کیا۔