لاہور ہائیکورٹ ، خاتون کے دیور کی جانب سے چار بیٹیوں کو حبس بیجا میں رکھنے اور ان کی بازیابی کیلئے دائر درخواست پر ایس پی کینٹ کو بچیاں عدالت میں پیش کرنے کا حکم

بدھ مئی 20:36

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے خاتون کے دیور کی جانب سے چار بیٹیوں کو حبس بیجا میں رکھنے اور ان کی بازیابی کے لئے دائر درخواست پر ایس پی کینٹ کو بچیاں عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

(جاری ہے)

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سردار احمد نعیم نے کیس کی سماعت کی، درخواست نفسیاتی مریض چچا بچے لے کر رفو چکر ہو گیا خاتون عائشہ بی بی کے وکیل فیصل اقبال باجوہ ایڈووکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ نفسیاتی مریض چچا درخواست لے کر رفو چکر ہو گیا، انہوں نے کہا کہ بچوں کو چھین لینے سے ان کی والدہ ذہنی اذیت کا شکار ہو چکی ہے،انہوں نے استدعا کی کہ عدالت درخواست گزار کی چاروں بیٹیوں ساحہ، فضہ، دعا اور حزینے کو بازیاب کرانے کا حکم دے، متعلقہ پولیس تھانہ جنوبی چھائونی کے ایس ایچ اونے عدالت کو بتایا کہ بچیوں کا چچا گھر کو تالے لگا کر رفو چکر ہو گیا۔

جس پر عدالت نے حبس بیجا کی درخواست چھ جون تک ملتوی کرتے ہوئے ہوئے ایس پی کینٹ کوآئندہ سماعت پر بچیاں عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا۔