کپاس کی پیداوار میں اضافہ کیلئے بھرپور اقدامات کیے جا ئیں، ماہرین زراعت

بدھ مئی 18:57

لاہور۔30 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) ماہرین زراعت نے کپاس کے کھیتوں سے اٹ سٹ ،لمب ، مدھانہ گھاس ، جنگلی چولائی ، لہلی ، قلفہ، ہزار دانی،ڈیلا جیسی جڑی بوٹیوں کے فوری خاتمہ کی ہدایت کرتے ہو ئے کہاہے کہ موجودہ حالات میں جبکہ پہلے ہی کپاس کی پیداوار میں تیزی سے کمی واقع ہو رہی ہے اگر جڑی بوٹیوں کا بروقت تدارک نہ کیاگیا تو کپاس کی پیداوار مزید کم ہو جائے گی جس سے جہاں دھاگے اور کپڑے سمیت دیگر کاٹن مصنوعات کا بحران پیداہوگا وہاں ملک کاٹن مصنوعات کی برآمدات کے ذریعے قیمتی زرمبادلہ کے حصول سے بھی محروم رہ جائے گا، ایک ملاقات کے دوران انہوںنے بتایاکہ پاکستان دنیا بھر میں کپاس پیداکرنے والے ممالک میں چوتھے نمبر پر ہے جبکہ ملکی مجموعی پیداوار کا 80 فیصد حصہ پنجاب سے حاصل کیاجاتاہے ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ اگر جڑی بوٹیوں کا فوری تدارک نہ کیاگیا توکپاس کی پیداوار کے مقررہ اہداف پورے نہ کئے جاسکیں گے۔