اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبہ سی پیک کا حصہ ہے ‘ نگران حکومت کے دور میں بھی کوئی رکاوٹ پیدا نہیں ہو گی ،کام جاری رہے گا‘خواجہ احمد حسان

تما م متعلقہ اداروں اور محکموں میں ہم آہنگی پیدا کرنے کیلئے سٹیئرنگ کمیٹی کمشنر لاہور کی زیر نگرانی کام کرے گی ‘چیئرمین سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس سے خطاب

بدھ مئی 19:00

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 مئی2018ء) وزیر اعلی پنجاب کے مشیر اور سٹیرنگ کمیٹی کے چیئرمین خواجہ احمد حسان نے کہا ہے کہ اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبہ سی پیک کا حصہ ہے ‘ نگران حکومت کے دور میں بھی کوئی رکاوٹ پیدا نہیں ہو گی اور اس پر بلاتعطل کام جاری رہے گا ، تما م متعلقہ اداروں اور محکموں میں ہم آہنگی پیدا کرنے کے لئے سٹیئرنگ کمیٹی کمشنر لاہور عبد اللہ سنبل کی زیر نگرانی کام کرے گی ، میٹرو ٹرین روزانہ لاکھوں عام شہریوں کو آمدورفت کی معیاری سہولت مہیا کر کے لاہور کی تعمیر و ترقی کے لئے گیم چینجر ثابت ہو گی،ٹرین کی کامیاب آزمائشی سروس کے بعد شہریوں کی توقعات میں اضافہ ہوا ہے اور وہ جلد ازجلد اس کا باقاعدہ آپریشن شروع ہونے کے منتظر ہیں،ترقیاتی منصوبوںپر تیزی سے عمل درآمد کی بدولت شہباز سپیڈ ا اورپنجاب سپیڈ اصطلاحات مشہور ہوئی ہیں تا ہم عوامی فلاح و بہبود کے منصوبوں میں معیار پر کوئی سمجھو تہ نہیں کیا گیا - وہ گزشتہ روز سٹیئرنگ کمیٹی کے خصوصی اجلاس سے خطاب کر رہے تھی-اجلاس کو بتایا گیا کہ مجموعی طورپرمنصوبے کا89فیصد تعمیراتی کام مکمل کر لیا گیا ہے ۔

(جاری ہے)

ڈیرہ گجراں سے چوبرجی تک پیکیج ون کا94فیصد‘ چوبرجی سے علی ٹائون تک پیکیج ٹو کا 85فیصد ‘پیکیج تھری ڈپو کا89فیصد جبکہ پیکیج فور سٹیبلینگ یارڈ کی تعمیر کا 91فیصد کام مکمل کیا جا چکا ہے ۔اس کے علاوہ منصوبے کا73فیصد الیکٹریکل ومکینیکل ورکس بھی مکمل کر لیا گیا ہے ۔ میٹرو ٹرین کے تمام 24بالائے زمین سٹیشنوں اور ایک زیر زمین سٹیشن کا گرے سٹرکچر مکمل کر لیا گیا ہے جبکہ جی پی او سٹیشن کا گرے سٹرکچر تعمیر کرنے کا کام تیزی سے جاری ہے ۔

میٹرو ٹرین کے 26میں سی20سٹیشنوں کے درمیان پٹری بچھا دی گئی ہے ۔ باقی 6سٹیشنوں کے درمیان اگلے ماہ تک پٹری بچھاکر ایک سے دوسرے سر ے تک ٹرین کا راستہ مکمل کر لیا جائے گا۔ 13.7کلو میٹر طویل پیکیج ون کے 10.9کلومیٹر طویل حصہ پر پٹری بچھا دی گئی ہے جبکہ 13.4کلومیٹر طویل پیکیج ٹو کے 9کلومیٹر حصے پر پٹری بچھا ئی گئی ہے ۔ اسی طرح مجموعی طور پر 27کلومیٹر میں سے 20کلو میٹر پٹری بچھا دی گئی ہے ۔

منصوبے کے تحت پیکیج ون کے سٹیشنوں پر نصب کئے جانے والے 77برقی زینوں میں سے 73برقی زینے نصب کئے جا چکے ہیں جبکہ پیکیج ٹو کے 80میں سے 65برقی زینے لگا دیئے گئے ہیں۔ پیکیج ون کے سٹیشنوں پر نصب کی جانے والی 48میں سے 46لفٹیں جبکہ پیکیج ٹو کے سٹیشنوں پر نصب کی جانے والی 52میں سے 44لفٹیں بھی نصب کر دی گئی ہیں۔اجلاس میں ایم پی اے چوہدری شہباز‘ کمشنر لاہور عبد اللہ سنبل‘ جنرل منیجر نیسپاک سلمان حفیظ‘چیف انجینئر ٹیپا ایل ڈی اے مظہر حسین خان اور لیسکو‘پی ٹی سی ایل ‘سوئی گیس ‘ ریلوے‘ ٹریفک پولیس ‘سول ڈیفنس‘ریسکیو1122 اور دیگر متعلقہ محکموں کے اعلیٰ افسران کے علاوہ منصوبے کے چینی کنٹریکٹر سی آر نورنکو اور چائنہ ا نجینئر نگ کنسلٹنس کے نمائندے اور مقامی کنٹریکٹرز بھی موجود تھے۔