امن کا مشن ابھی نامکمل ہے، مزید منازل طےکرنی ہیں،آرمی چیف

آرمی چیف کاسدرن کمانڈ ہیڈکوارٹرزکوئٹہ کا دورہ ، پاک افغان سرحد پرباڑ، سیف سٹی ،خوشحال بلوچستان پر بریفنگ، امن واستحکام کیلئے ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے،فورسز کی قربانیوں کے باعث امن کی راہ پرگامزن ہیں۔آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ بدھ مئی 19:43

امن کا مشن ابھی نامکمل ہے، مزید منازل طےکرنی ہیں،آرمی چیف
راولپنڈی(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔30 مئی 2018ء) : چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے آج سدرن کمانڈ ہیڈکوارٹرزکوئٹہ کا دورہ کیا، آرمی چیف کو امن واستحکام اور آپریشنل تیاریوں پربریفنگ دی گئی۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے آج کوئٹہ کا دورہ کیا۔ پاک فوج کے سپہ سالار جنرل قمر جاوید باجوہ کو پاک افغان سرحد پرباڑ، مینجمنٹ ، سیف سٹی اور خوشحال بلوچستان پراجیکٹ پر بریفنگ دی گئی۔

آرمی چیف کو بلوچستان میں سماجی اوراقتصادی پروگرامز بارے پیشرفت سے بھی آگاہ کیا گیا۔۔آرمی چیف نے بلوچستان میں سکیورٹی اقدامات اور آپریشنل تیاریوں پراظہار اطمینان کیا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کوئٹہ میں کمانڈ اینڈ اسٹاف کالج میں افسران اور فیکلٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سکیورٹی فورسز کی عظیم قربانیوں کے باعث امن قائم ہوا۔

(جاری ہے)

آرمی چیف نے کہا کہ نوجوان ، افسران آپریشن میں بھرپور توانائیاں صرف کررہے ہیں۔ جنرل قمر جاوید باجوہ نے واضح کیا کہ امن کا مشن ابھی نامکمل ہے۔کام ابھی ختم نہیں ہوا ،امن کیلئے مزید کامیابی کی منازل طے کرنی ہیں۔انہوں نے کہا کہ امن واستحکام کیلئے ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے۔۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے مزید کہا کہ سکیورٹی فورسز کی قربانیوں کے باعث آج ہم امن واستحکام کی راہ پرہیں۔

فورسز کی قربانیوں کے باعث امن کی راہ پرگامزن ہیں۔واضح رہے پاک فوج نے بلوچستان میں دہشتگردی کی کمرتوڑ دی ہے۔ ایک وقت تھا جب بلوچستان میں علیحدگی پسند تحریکیں چل رہی تھیں۔ اور ملک دشمن قوتوں کے جاسوس دہشتگردی کے جال بچھانے میں مصروف رہتے تھے۔ لیکن پاک فوج اور بلوچ عوام نے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرکے بلوچستان میں امن قائم کردیا ہے۔

آج بلوچستان میں دنیا کی سب سے بڑی گوادربندرگاہ کی تعمیر ہوئی ہے،جہاں سے سی پیک منصوبے کے ذریعے دنیا بھر میں تجارت ممکن ہوسکے گی۔اسی طرح فوجی اور سویلین قیادت نے ملکر بلوچستان میں ترقیاتی پروگراموں کا جال بچھا دیا ہے۔ جبکہ پاک فوج کے اقدامات سے پاک افغان سرحد پر طویل باڑ لگائی ہے تاکہ سکیورٹی مینجمنٹ بہتر ہوسکے۔مینجمنٹ اور باڑ سے دہشتگردوں کی بلوچستان اور خیبرپختونخواہ کے علاقوں میں آمدورفت کا عمل رک گیا ہے۔جس سے پاکستان میں دہشتگردی کا خاتمہ ممکن ہوسکا ہے۔