الحمرا ہال میں مار کھانے والے لیگی کارکن کے ساتھ حکومت نے کیا وعدے کئیے جو کبھی وفا نہ ہو سکے

میاں صاحب سے درخواست کی تھی کہ میں کرایے کے مکان میں رہتا ہوں مجھے ایک گھر دے دیا جائے ، میاں صاحب نے وعدہ تو کر لیا لیکن وہ آج تک پورا نہیں ہو سکا، ایوب کا شکوہ

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس بدھ مئی 22:55

الحمرا ہال میں مار کھانے والے لیگی کارکن کے ساتھ حکومت نے کیا وعدے کئیے ..
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار-30 مئی 2018ء) :الحمرا ہال میں مار کھانے والے لیگی کارکن کے ساتھ حکومت نے کیا وعدے کئیے جو کبھی وفا نہ ہو سکے،ایوب نے دل کی بھڑاس نکا دی۔ایوب نے شکوہ کیا کہ میں نے میاں صاحب سے درخواست کی تھی کہ میں کرایے کے مکان میں رہتا ہوں مجھے ایک گھر دے دیا جائے ، میاں صاحب نے وعدہ تو کر لیا لیکن وہ آج تک پورا نہیں ہو سکا۔

اردو پوائنٹ کو انٹرویو دیتے ہوئے ایوب وسایا کہنا تھا کہ میرا مسلم لیگ ن سے 1992کا تعلق ہے جب بھارت میں بابری مسجد شہید ہوئی ۔تب سے لے کر آج تک میرا مرنا جینا سب کچھ مسلم لیگ ن کے ساتھ ہے۔ایوب بے بتایا کہ ایک تقریب میں جب میری دستار بندی کی گئی تو میں نے نواز شریف اور میاں شہباز شریف سے درخواست کی کہ میاں صاحب میں ایک غریب آدمی ہوں اور کرایے کے مکان پر رہ رہا ہوں مجھے ایک مکان دے دیا جائے۔

(جاری ہے)

ایوب کا کہنا ہے کہ اس موقع پر خواجہ سعد رفیق بھی موجود تھے اور چوہدری غفور بھی وہاں ہی تھے۔میری درخواست پر میاں محمد شہباز شریف کا کہنا تھا کہ مجھے مکان دے دیا جائے گا ، لکین اس کے بعد قیادت نے وہ وعدہ بھلا ڈالا ، میں اس مقصد کے لیے بڑا بھاگا ،کوشش کی لیکن کوئی فائدہ نہ ہوا۔میں نے 2016 میں میاں حمزہ شہباز شریف کو بھی درخواست دی تھی۔

حمزہ شہباز نے مجھے یقین دلایا کہ میرے لیے مکان کا بندوبست کر دیا جائے گا ، مجھے اگلے دن بلایا بھی گیا اور وہاں موجود شخص کو جس کو سب چٹھہ صاحب کہہ رہے تھے حمزہپ شہباز نے کہا کہ چٹھہ صاحب ایوب وسایا کے نام ایک چیک تیار کریں جہاں یہ رہتے ہیں جلو موڑ وہاں پر ہی ان کے لیے مکان کا بند و بست کر دیا جائے۔دوسرے دن میں گیا تو میری ان سے ملاقات نہ ہو سکی میں 28 مئی کو اسی سلسلے میں میاں صاحب سے ملنا چاہتا تھا لیکن جو کچھ وہاں پر ہوا وہ میری غلطی تھی ۔

ایوب کا کہنا تھا کہ میں چاہتا تھا کہ لوگ مجھے دیکھیں کہ میں اپنے لیڈر سے ہاتھ ملا رہا ہوں۔ان کا کہا تھا کہ میں مریم نواز کو سلام پیش کرتا ہوں جنہوں نے سب کے سامنے میرا نام لیا میں میاں صاحب کو سلام کرتا ہوں جنہوں نے مجھے مکان دینے کی یقین دہانی کروائی اور مجھے گلے سے لگایا۔ایوب وسایا نے مزید کیا کہا انٹرویو ملاحظہ کریں۔