اصغر خان کیس، حکومت کو آج شام تک کی مہلت دے دی گئی

یہ اتنا سنجیدہ معاملہ ہے اور حکومت کو کوئی فکر ہی نہیں،اصغر خان کیس میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کے سخت ریمارکس

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 12:20

اصغر خان کیس، حکومت کو آج شام تک کی مہلت دے دی گئی
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔31 مئی 2018ء) اصغر خان کیس میں حکومت کو آج شام تک کی مہلت دے دی گئی۔۔چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے دوران سماعت سخت ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ یہ اتنا سنجیدہ معاملہ ہے اور حکومت کو کوئی فکر ہی نہیں ہے۔تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے اصغر خان کیس میں کابینہ اجلاس نہ بلانے پر حکومت کو آج شام تک کی مہلت دے دی۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے خصوصی بینچ نے لاہور رجسٹری میں اصغر خان فیصلے پر عملدرآمد کیس کی سماعت کی۔۔سماعت کے دوران ڈی جی فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) بشیر میمن سپریم کورٹ میں پیش ہوئے اور بتایا کہ اس حوالے سے انکوائری جاری ہے۔۔چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کابینہ نے کابینہ نے اصضر خان کیس سے متعلق اب تک کوئی فیصلہ کیوں نہیں کیا۔

(جاری ہے)

جس کے بعد وفاقی حکومت کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ کابینہ کا اجلاس بلانے کی مہلت دی جائے۔جس کے بعد چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ یہ اتنا سنجیدہ مسئلہ ہے اور حکومت کو کوئی فکر نہیں ہے۔جسٹس ثاقب نثار نے اصغر خان کیس سے متعلق آج شام تک کابینہ کا اجلاس بلاکر فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ آج ہی اس فیصلے سے آگاہ کیا جائے۔ واضح رہے کہ رواں ماہ کے آغاز میں سپریم کورٹ نے وفاقی حکومت کو اصغرخان کیس سے متعلق عدالتی فیصلے پر عملدرآمد کا حکم دیا تھا۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے آج تک فیصلے کے بعد کوئی ایکشن نہیں لیا، صرف ایف آئی اے نے تحقیقات کی لیکن ایک جگہ پر یہ تحقیقات بھی رک گئیں۔ساتھ ہی چیف جسٹس نے اصغر خان کیس عملدرآمد کا معاملہ حکومت پر چھوڑتے ہوئے حکم دیا تھا کہ وفاقی حکومت اور ایف آئی اے اصغر خان کیس کے فیصلے کی روشنی میں قانون کے مطابق کارروائی کریں۔