تحریک انصاف میں ن لیگ سے کون ملا ہوا ہے؟عمران خان نے اپنے ہی رہنمائوں کیخلاف بڑا فیصلہ کرلیا

تحقیقات شروع کر دی گئیں پاکستان تحریک انصاف کے 5 رہنماؤں کو ن لیگ کے ساتھ رابطے میں رہنے والے پی ٹی آئی رہنماؤں سے متعلق تحقیقات کرنے کا ٹاسک سونپ دیا گیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 12:36

تحریک انصاف میں ن لیگ سے کون ملا ہوا ہے؟عمران خان نے اپنے ہی رہنمائوں ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔31مئی۔2018ء) تحریک انصاف میں پاکستان مسلم لیگ ن سے کون ملا ہوا ہے۔تحقیات شروع کر دی گئیں۔قومی اخبار کی ایک رپورٹ کے مطابق ذرائع نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ ناصر کھوسہ کی نامزدگی کے وقت تحریک انصاف کے مخلتف حلقوں میں یہ رائے چل رہی تھی کہ وزارت اعلی کا منصب شہباز شریف کے سنبھالنے کے بعد یہ پنجاب کے پہلے چیف سیکرٹری تھے۔

اور جو 57 کمپنیاں پنجاب کے اندر بنائی گئی ہیں وہ پرائیویٹ تھیں۔جن کے ساتھ پنجاب حکومت کا اشتراک تھا۔اس میں سے 4سے 5 ایسی کمپناں ہیں جو ناصر کھوسہ کے دور میں بنیں۔ان 57کمپنیوں میں اربوں روپے کے گھپلے کیے تھے۔بدھ کو پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کے زیر صدارت ایک اجلاس ہوا ۔جس میں یہ بات بھی زیر غور آئی کے پی ٹی آئی کے اندر کچھ انڈر گراؤنڈ یا خفیہ معاملات ہیں۔

(جاری ہے)

پی ٹی آئی میں باقاعدہ 4 ۔5لوگوں کو ٹاسک دیا گیا ہے کہ وہ اس بات کی تحقیات کریں کہ پاکستان تحریک انصاف میں کون یہ کام کر رہا ہے۔اور یہ بھی کہا گیا کہ اس بات کی بھی تحقیقات کی جائیں کہ پی ٹی آئی لیڈر شپ میں ایسے کون سے لوگ ہیں کو ن لیگ کے ساتھ رابطے میں ہیں۔یہ بھی سوال پیدا ہوتا ہے کہ کہیں ناصر کھوسہ کا نام انہی کی وجہ سے تو نہیں دیا گیا۔

اور انہی کیو جہ سے خفیہ دروازے سے کچھ بالواسطہ بور پر کچھ لوگ ن لیگ کے ساتھ ہیں۔یاد رہے گزشتہ روز پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) نے بڑا یوٹرن لیتے ہوئے نگران وزیرِاعلیٰ پنجاب کیلئے ناصر خان کھوسہ کا نام واپس لے لیا تھا۔ پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید کا اس فیصلے پر بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہم غلط فہمی کا شکار ہو گئے تھے، اس لیے جلد بازی میں نام دے بیٹھے، پارٹی میں مشاورت کے بعد نیا نام دیں گے۔

میاں محمود الرشید نے موقف اپنایا کہ نام مجھے پارٹی چیئرمین کی طرف سے دیئے گئے تھے۔ طارق کھوسہ اور ناصر کھوسہ کے ناموں کی وجہ سے کنفوژن ہوئی۔ نگران وزیرِاعلیٰ پنجاب کے معاملہ میں پی ٹی آئی نے پہلے کامران رسول اور طارق کھوسہ کا نام تجویز کیا تھا، اب بھی یہ نام سامنے آ سکتے ہیں۔ پی ٹی آئی کی جانب سے تاحال کامران رسول اور طارق کھوسہ کا نام زیرِ غور ہے۔دوسری جانب پنجاب حکومت بھی ڈٹ گئی اور ناصر خان کھوسہ کا نام واپس لینے سے انکار کر دیا۔ وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ کے مطابق اب نوٹیفکیشن جاری ہو چکا ہے اور نام واپس نہیں لیا جا سکتا۔