نیب نے وفاقی حکومت ختم ہوتے ہی بڑے اقدامات کا فیصلہ کر لیا

نیب نے چوہدری شجاعت،پرویز الہی،خواجہ سعد رفیق اور علیم خان سمیت 25 اہم شخصیات کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کا فیصلہ کر لیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 12:53

نیب نے وفاقی حکومت ختم ہوتے ہی بڑے اقدامات کا فیصلہ کر لیا
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔31مئی۔2018ء)  قومی اخبار کی ایک رپورٹ کے مطابق نیب نے وفاقی حکومت ختم ہوتے ہی بڑے اقدامات کا فیصلہ کر لیا ہے۔انتہائی معتبر ذرائع نے دعوی کیا ہے کہ قومی احتساب بیورو نے طلبی اور انکوائری سے آگے بڑھ کر کام کرنے کی حکمت عملی تیار کر لی ہے۔اس سلسلے میں چند بنیادی فیصلے بھی کر لیے گئے ہیں۔

ان کیسوں کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔اگر کسی کیس میں کوئی جان نہ ہوئی تو اسے ختم کر دیا جائے گا۔دوسری صورت میں ملزم گرفتار ہوں گے۔آنے والے چند دنوں میں بڑے پیمانے پر پکڑ دھکڑ شروع کر دی جائے گی ۔۔پنجاب کمپنیز سکینڈل کے اہم کرادر بھی سامنے لائے جائیں گے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ کوئی بھی ہائی پروفائل سیاست دان یا بیورو کریٹ انکوائری سے جلد باہر نہ آئے تو سمجھیں کہ وہ گرفتار ہو چکا ہے۔

(جاری ہے)

اس بارے میں دوسری اہم پیش رفت بھی سامنے آئی ہے کہ نیب نے سابق وزیر اعظم چوہدری شجاعت حسین، سابق وزیر داخلہ چوہدری پرویز الہی،مونس الہی،وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق،،وزیر پنجاب خواجہ سلمان رفیق، پیرا گون کے سی ای او ندیم ضیا، تحریک انصاف کے رہنما علیم خان،،وزیر اعظم کے پرنسیپل سیکرٹری فواد حسن فواد،سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد خان چیمہ،سیکرٹری پرائمری ہیلتھ پنجاب علی جان،سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ نجم شاہ سمیت 25شخصیات کے انم ای سی ایل میں ڈالنے کی سمری تیار کر لی گئی ہے۔

چئیرمین نیب کی باضابطہ منظوری کے بعد نگراں حکومت کی وزارت داخلہ سے ان افراد کو بیورن ملک جانے سے روکنے کے لیے درخواست کی جائے گی۔نیب حکام کو تشویش ہے کہ ان ہائی پروفائل کیسز میں ملوث سیاستدان اور بیورو کریٹس ملک سے باہر جاسکتے ہیں۔لہذا ان تمام افراد کا نام ایس ی ایل میں ڈالے کی تیاری کر لی گئی ہے۔