وزیراعظم شاہد خاقان نے نواز شریف کو شکست دے دی

نواز شریف نے اپنی وزارت عظمی کے دوران مجموعی طور پر کابینہ کے 36 اجلاس بلائے جب کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے 10ماہ کے دوران کابینہ کے 40 اجلاس بلائے

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات مئی 14:19

وزیراعظم شاہد خاقان نے نواز شریف کو شکست دے دی
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔31 مئی 2018ء) وزیراعظم شاہد خاقان نے نواز شریف کو شکست دے دی۔ نواز شریف نے اپنی وزارت عظمی کے دوران مجموعی طور پر کابینہ کے 36 اجلاس بلائے جب کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے 10ماہ کے دوران کابینہ کے 40 اجلاس بلائے۔نجی ٹی وی چینل کی ایک رپورٹ کے مطابق وفاقی آئینی مدت آج رات بارہ بجے ختم ہو جائے گی۔پاکستان مسلم لیگ ن کے پانچ سالہ دور حکومت میں وفاقی کابینہ کے کل 76 اجلاس ہوئے۔

اجلاس بلانے کے معاملے میں وزیر اعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ نواز شریف نے اپنی وزارت عظمیٰ کے دور میں مجموعی طور کابینہ کے چھتیس اجلاس بلائے، ان کے مقابلے میں شاہد خاقان عباسی نے دس ماہ کے مختصر عرصے میں چالیس اجلاس بلائے۔

(جاری ہے)

نواز شریف نے اپنی وزارت عظمی کے پہلے 13ماہ میں 14 اجلاس بلائے تھے۔

دوسرے سال 7اجلاس بلائے جب کہ تیسرے سال صرف تین اجلاس بلائے گئے۔۔اس دوران نواز شریف نے ایک اجلاس کی صدارت لندن میں بیٹھ کر ویڈیو لنک کے زریعے بھی کی تھی۔اپنی وزارت عظمی کے چوتھے برس نواز شریف نے کابینہ کے 12 اجلاس بلائے جس کے بعد نواز شریف کو نا اہل قرار دیا گیا تھا اور نواز شریف کو وزرات عظمی سے ہاتھ دھونا پڑا تھا۔بطور وزیراعظم نواز شریف کی نا اہلی کے بعد وزیراعظم کا منصب شاہد خاقان عباسی کے حوالے کیا گیا تھا۔

بطور وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ہر ہفتے کابینہ کا ایک اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا تھا۔صرف ایک یا دو اجلاس وزیراعظم کے ملک سے باہر ہونے کی وجہ سے موخر ہوئے۔ نواز شریف نے 4 سال میں 36، عباسی نے 10 ماہ میں 40 اجلاس بلائے، شاہد خاقان عباسی نے وزارت عظمیٰ کا عہد سنبھالتے ہی اعلان کیا تھا کہ وہ 45 دن میں 45 مہینوں کا کام کرکے جائیں گے۔ اگر ان کی کارکردگی کا موازنہ نواز شریف سے کیا جائے تو ان کی بات درست لگتی ہے۔