عالمی فٹ بال کپ کے حوالے سے میزبان روسی ٹیم کی کارکردگی پر شکوک و شبہات

جمعرات مئی 15:16

ماسکو۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) روس میں 14جون سے شروع ہونے والے فٹ بال کے عالمی کپ میں میزبان ٹیم روس کی کارکردگی کے حوالے سے شکوک و شبہات کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ جرمن خبر رساں ادارے کے مطابق روسی فٹ بال ٹیم کے کوچ جوشم لو نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہدف بالکل واضح ہے ہمیں خود کو بہترین میزبان ٹیم ثابت کرنا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں فائنل یا سیمی فائنل میں جرمنی کے مد مقابل ہونا ہے۔

انہوں نے کہاکہ اگر ہم اس مرحلے تک رسائی حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے تو میں دنیا کا خوش قسمت ترین شخص ہوں گا۔ روسی کوچ نے مزید کہا کہ وہ اپنی ٹیم میں موجود مسائل کو بھی تسلیم کرتے ہیں۔ ان کے تین اہم کھلاڑی کمر کی تکلیف کا شکار ہیں۔ اس کے علاوہ دو دفاعی کھلاڑی فی الحال کھیلنے کے قابل نہیں ہیں جبکہ پچاس بین الاقوامی میچوں میں ملک کی نمائندگی کرنے والے فارورڈ کھلاڑی الیگزینڈر کوکورن مارچ میں کھیلے گئے ایک میچ کے دوران زخمی ہو گئے تھے۔

(جاری ہے)

اس کے علاوہ روسی فٹ بال ٹیم میں نئے ابھرتے ہوئے با صلاحیت کھلاڑیوں کی بھی کمی ہے۔اس سے قبل1994ء، 2002ء اور 2014ء کے عالمی مقابلوں میں روس کی ٹیم پہلے ہی راؤنڈ میں ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی تھی تاہم موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے یہ کہا جا سکتا ہے کہ اگر روسی ٹیم پہلے راؤنڈ میں ہی ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی تو حیرت کی بات نہیں ہو گی۔ اس سے قبل 2010 ء کے عالمی کپ کے میزبان ملک جنوبی افریقہ کا سفر بھی ابتدائی تین میچوں کے بعد ہی اختتام پذیر ہو گیا تھا۔