سپریم کورٹ باراور گیریژن یونیورسٹی کے تعاون سے وائٹ کالر کرائم سے نمٹنے کے حوالے سے ورکشاپ 2 جون کو ہوگی

جمعرات مئی 18:22

لاہور۔31 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) سپریم کورٹ باراور گیریڑن یونیورسٹی کے تعاون سے وائٹ کالر کرائم سے نمٹنے ،موثر قانون سازی اور تفتیش کے جدید طریقوں کو اختیار کرنیکے حوالے سے دو جون کو لاہور میں ورکشاپ کا انعقاد کیا جارہا ہے،،چیف جسٹس آف پاکستان مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار ورکشاپ سے خطاب کریں گے۔

(جاری ہے)

سی پیک سے متعلق عالمی کانفرنسز میں شرکت کے بعد چیف جسٹس پاکستان تین جون تک سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں عدالت لگائیں گے،،چیف جسٹس پاکستان نے اہم اور فوری نوعیت کے مقدمات کے علاوہ مفاد عامہ کے مقدمات اور از خود نوٹسز کی سماعت کریں گے،،چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار دو جون کو سپریم کورٹ بار اور گیریژن یونیورسٹی کے تعاون سے وائٹ کالر کرائم کے حوالے سے ہونے والی قومی ورکشاپ میں شرکاء سے خطاب کریں گے،بین الاقوامی انسٹیٹیوٹ آف وائٹ کالرکرائم میاں ظفر اقبال کلانوری نے بتایا ہے کہ وائٹ کالر کرائم کے حوالے سے ہونے والی قومی ورکشاپ میں سائبر قانون میں موجود سقم دور کرنے،ججز،پراسیکیوٹرز اور تفتیش کاروں کی خصوصی تربیت کا اہتمام کرنے،نئی قانون سازی کے علاوہ منی لانڈرنگ،بینکنگ اور ٹیکس فراڈ سے نمٹنے کے حوالے سے امور کا جائزہ لیا جائے گا،انہوں نے بتایا کہ ورکشاپ سے چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ محمد یاور علی،چئیرمین نیب،،ایس ای سی پی کے چئیرمین،سٹیٹ بینک کے نمائندے،قومی بینکوں کے صدور،چاروں صوبائی ایڈووکیٹ جنرلز،پراسیکیوٹر جنرلز ،تحقیقاتی ایجنسیوں کے افسران بھی خطاب کریں گے۔