سردار چرن سنگھ کے قاتلوں کو فوری گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے،سکھ رہنمائوں کا کے پی کے حکومت سے مطالبہ

جمعرات مئی 18:42

لاہور۔31 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) پاکستان سکھ گورو دوارہ پر بندھک کمیٹی و دیگر سکھ رہنمائوںنے حکومت خیبر پختونخواہ سے مطالبہ کیا ہے کہ سردار چرن سنگھ کے قاتلوں کو فوری گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے ۔ انہوں نے یہ مطالبہ گورو دوارہ ڈیرہ صاحب میں ایک پریس کانفرنس کے دوران کیا ۔قبل ازیں پشاور میں فائرنگ کے نتیجہ میں وفات پانے والے سردار چرن سنگھ کی سکھ مذہب کے مطابق( آتمک شانتی)کے لیے خصوصی عبادات اور دعائیہ تقریبات بھی اہتمام کیا گیا۔

دعائیہ تقریب میں سردار رمیش سنگھ اروڑا ،سابقہ پردھان سردار بشن سنگھ ،سابقہ جنرل سیکرٹری گوپال سنگھ چاولہ و دیگر سکھ رہنمائوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ سردار رمیشن سنگھ اروڑا نے کہا کہ متروکہ وقف املاک بورڈ اور پاکستان سکھ گورو دوارہ پر بندھک کمیٹی اورپوری سکھ قوم سردار چرن چیت سنگھ کے لیے سو گوار ہے ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ حکومت خیبر بختونخواہ سے درخواست کی گئی ہے کہ سکھ برادری کے تحفظ کو یقینی بنائیں ۔

انہوںنے پاکستان سکھ گورو دوارہ پر بندھک کمیٹی کی طرف سے چرن سنگھ کے لواحقین کے لیے 5لاکھ روپے مالی امداد دینے کا اعلان کیا ۔سابقہ پردھان سردار بشن سنگھ نے بتایا کہ پاکستان ہمارے سکھ قوم کے لیے جنت سے کم نہیں ہم خود کو ہمسایہ ملک کی نسبت پاکستا ن میں زیادہ محفوظ سمجھتے ہیں ،ہمیں پاکستانی ہونے پر فخر ہے ۔سردار گوپال سنگھ چاولہ نے کہا کہ اس واقع کے بعد بھارت میں نام نہاد تنظیم آر ایس ایس (راشٹریہ سیوک سنگھ)کے خرید کردہ مالی وضائف پر چلنے والے ہمارے بھارتی سکھ رہنما ہمارے دکھ میں شریک ہونے کی بجائے اس کا فائدہ اٹھا کر پاکستان کو عالمی سطح پر بدنام کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ،میر ی ہندو ستان میں رہنے والے سکھ رہنمائوں سے استدعا ہے کہ اس دکھ کی گھڑی میں ہمارے مدد کریں ۔

انہوںنے کہا کہ اس طرح کے واقعات پاکستان کو بدنام کرنے کی سازش ہیں ،سکھوں کا پاکستان سے کبھی بھی نہ ختم ہونے والا رشتہ ہے ۔تقریب میں موجود تمام شرکاء نے وفات پانے والے سردار چرن جیت سنگھ کے لیے خصوصی ارداس اور دکھ و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم لواحقین کے غم میں برابر کے شریک ہیں ۔