سعودی جنرل ڈائریکٹو ریٹ برائے پاسپورٹس نے بیرون ممالک سے آنے والے عمرہ زائرین کو نئی ہدایات جاری کردیں

ویزے کی مقررہ مدت سے زیاد ہ قیام اورکام کرنے کی صورت میں جرمانہ اداکرنا پڑے گا،غیرملکی معتمرین ملک کے دیگر شہروں کے سفر سے گریز کریں اور مقررہ شیڈول کے مطابق وطن واپس لوٹ جائیں، حکام

جمعرات مئی 19:31

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) سعودی عرب میں عمرہ زائرین کو ویزے کی مقررہ مدت سے زیاد ہ قیام اورکام کرنے کی صورت میں جرمانہ اداکرنا پڑے گا۔۔سعودی جنرل ڈائریکٹو ریٹ برائے پاسپورٹس نے بیرون ممالک سے آنے والے عمرہ زائرین کو ہدایت جاری کی ہے کہ عمرے پر آنے والے غیرملکی افراد مکہ ،،جدہ اور مدینہ سے باہر نہ جائیں، عمرہ ویزا صرف مذہبی فریضہ اد اکرنے کی غرض سے ہے لہذاغیرملکی معتمرین ملک کے دیگر شہروں کے سفر سے گریز کریں اور مقررہ شیڈول کے مطابق وطن واپس لوٹ جائیں۔

(جاری ہے)

سعودی حکام نے عمرہ زائرین کو خبردار کیا ہے کہ ویزے کی مدت سے زیادہ قیام کرنے کی صور ت میں نہ صرف ڈی پورٹ کیا جائے گابلکہ 50ہزار سعودی ریا ل جرمانہ اور چھ ماہ تک قید کی سزا کا بھی سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔۔سعودی ادارہ برائے شماریات کے مطابق گزشتہ سال 2017ء کے دوران دنیا کے دیگر ملکوں سے 65 لاکھ 32 ہزار 74 افراد عمرہ کے لیے حجاز مقدس آئے تھے۔جبکہ پاکستان سے سالانہ دو ملین سے زیادہ افراد عمرہ کی سعادت کیلئے سعودی عرب کا رخ کرتے ہیں جبکہ بارہ لاکھ سے زیادہ افراد حج کیلئے سعودی عرب جاتے ہیں۔۔۔۔۔۔۔ شمیم محمود،نامہ نگار