سوئی سدرن گیس کمپنی میں گیس چوری عروج پر پہنچ گئی

کراچی کی پانچ ملوں نے 14 کروڑ کی گیس چوری کرلی ، حیدر آباد ، سندھ سے 78گیس چور پکڑے گئے

جمعرات مئی 19:31

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) سوئی سدرن گیس کمپنی میں گیس چوری عروج پر پہنچ گئی ہے کراچی کی 5 ملوں نے مجموعی طور پر 14کروڑرو روپے کی گیس چوری کی ہے جبکہ کمپنی اس انتظامیہ ملوں سے گیس چوری کی رقم ریکور نہ کرسکی۔ کراچی کی فاروق سنز کیمیکل نے 86لاکھ روپے کی گیس چوری کی ہے۔

(جاری ہے)

انشاء ڈائننگ اینڈ بیجنگ کمپنی نے 41 لاکھ روپے کی گیس چوری کررکھی ہے ، احمد رضاڈائہگ نی18لاکھ روپے کی گیس چوری کی ہے غنی گلاس والوں نے بھی 43 ملین یعنی ساڑھے چار کروڑ کی گیس چوری میں ملوث ہے جبکہ میکرا سائیٹ فیکٹری والوں نے گیس کنکشن براہ راست لگا کر 7 کروڑ 68 لاکھ روپے کی گیس چوری کی ہے کمپنیوں کو گیس چوری کی ترغیب دینے میں سوئی سدرن کا عملہ بھی ملوث ہے جس کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی سرکاری دستاویزات میں انکشاف ہوا ہے کہ اتحاد گیس ٹریڈز نے کمپنی کے ساتھ فراڈ کرکے ساڑھے تین کڑور روپے کا نقصان پہنچایا ہے جس کی ریکوری ابھی تک نہیں ہوئی ہے اتحاد ٹریڈز نے فراڈ ثابت ہونے پر اور جو چیک کمپنی کو دیئے تھے وہ بھی باؤنس ہوچکے ہیں پھر بھی کمپنی کے خلاف مقدمہ درج نہیں کرایا گیا ہے دستاویزات میں انکشاف ہو اہے کہ حیدرآباد سندھ میں کمپنی کی مانیٹرنگ ٹیموں نے 78گیس چوروں کو پکڑا تھا ان گیس چوروں سے نہ ابھی ریکوری ہوئی ہے نہ ہی مقدمات درج ہوئے ہیں اسی چوری میں کمپنی کا اپنے عملہ بھی شامل ہے جبکہ سوئی سدرن اوگراسے گیس چوری کے تحت مزید سہولیات لینے کا دعویٰ کررکھا ہی