ایران کے 3اداروں،6افراد پر مزید پابندیاں عائد کر دی گئیں

پابندیوں کا اطلاق ا نسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوںکے ارتکاب پر کیا گیا،امریکی موقف

جمعرات مئی 23:20

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) امریکہ نے ایران کے 3 اداروں اور 6 افراد پر مزید پابندیاں عائد کر دیں،پابندیوں کا اطلاق تہران کی جانب سے ا نسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوںکے ارتکاب پر کیا گیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی حکومت نے ایران کے تین اداروں اور چھ افراد پر نئی پابندیاں لگا دی ہیں جن کے متعلق حکومت کا کہنا ہے کہ انہوں نے تہران کی طرف سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا ہے۔

امریکی حکومت نے ایران کے تین اداروں اور چھ افراد پر نئی پابندیاں لگا دی ہیں جن کے متعلق حکومت کا کہنا ہے کہ انہوں نے تہران کی طرف سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا ہے۔امریکی وزارت خزانہ نے گزشتہ روز جن تین گروپس پر پابندیاں لگائی ہیں ان میں ایران کے حکومت نواز بااختیار گروپ انصار حزب اللہ ، تہران کی اوین جیل اور حکومت کی سرپرستی میں قائم موبائل فون کے ایپ بنانے والی کمپنی ہانیستا پروگرامنگ گروپ شامل ہیں۔

(جاری ہے)

پابندیوں کی زد میں آنے والے عہدیداروں میں سائبر ریسرچ کمیٹی کے سیکریٹری جنرل عبدالصمد خرم آبادی،السیبرانی اعلی فضائی کونسل کے چیئرمین ابو الحسن فیروز آبادی، ریڈیو اور ٹیلی ویژن کارپوریشن کیچیئرمین عبد علی عسکری شامل ہیں۔ ان افراد پر پرامن مظاہرین کو طاقت سے کچلنے میں مدد فراہم کرنے اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے ارتکاب کا الزام عائدکیا گیا ہے۔