برطانیہ کا سابق اسرائیلی وزیر اعظم ایہود بارک پر جنگی جرائم کا مقدمہ کا مطالبہ

مظاہرین نے فلسطینی پرچم لہراتے ہوئے اسرائیل مخالف نعرے بھی لگائے

جمعرات مئی 23:20

لندن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 31 مئی2018ء) برطانیہ نے سابق اسرائیلی وزیر اعظم ایہود بارک پر جنگی جرائم کا مقدمہ چلانے کا مطالبہ کر دیا ،مطالبہ کرنے والوں میں یہودی مذہبی راہنما بھی شامل تھے،مظاہرین نے فلسطینی پرچم لہراتے ہوئے اسرائیل مخالف نعرے بھی لگائے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق برطانوی شہریوں نے سابق اسرائیلی وزیر اعظم ایہود بارک پر جنگی مجرم کی حیثیت سے مقدمہ چلائے جانے کا مطالبہ کیاہے۔

(جاری ہے)

مختلف طبقوں سے تعلق رکھنے والے برطانوی عوام کی ایک بڑی تعداد لندن میں اس مقام پر جمع ہوئی جہاں سابق اسرائیلی وزیر اعظم ایہود بارک تقریر کر رہے تھے۔جنگی مجرم کی حیثیت سے ایہود بارک کیخلاف قانونی کارروائی کئے جانے کا مطالبہ کیا۔ برطانوی عوام کے اس اجتماع میں یہودی مذہبی رہنما بھی شامل تھے۔مطالبہ کیا گیا کہ ایہود بارک کے ہاتھ مظلوم فلسطینیوں کے خون سے رنگین ہیں۔مظاہرین نے فلسطینی پرچم لہراتے ہوئے اسرائیلی حکومت کے جرائم کی مذمت میں نعرے بھی لگائے۔برطانوی عوام نے اسی طرح غزہ میں اسرائیلی حکومت کے جرائم کی تصاویر کی بھی نمائش کی۔