خواتین کھلاڑیوں کو سہولیات فراہم کی جائیں تو انٹرنیشنل سطح پر تیر اندازی کے کھیل میں ملک کا نام روشن کر سکتی ہیں، نورین شاہ

جمعہ جون 11:30

اسلام آباد ۔یکم جون (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) فاٹا سے تعلق رکھنے والی تیراندازی کی آرگنائزر نورین شاہ نے کہا ہے کہ فاٹا میں ویمنز آرچڑی کے کھیل میں بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہے اس ٹیلنٹ کو بروائے کار لانے کیلئے حکومت اور پاکستان آرچڑی فیڈریشن ضروری اقدامات کرے تاکہ فاٹا کی خواتین کھلاڑی بھی انٹرنیشنل سطح پر ملک کا نام روشن کر سکیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی خواتین کھلاڑی کسی سے کم نہیں ہیں۔ کھیل کا میدان، سیاست یا معاشیات ہو، پاکستانی کھلاڑیوں نے کرکٹ،، اتھلیٹکس، جوڈو اور جوجٹسو میں انٹرنیشل سطح پر ملک کا نام روشن کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان آرچڑی فیڈریشن کے سیکرٹری جنرل وصال محمد خان ملک میں آرچڑی کے کھیل کی ترقی کیلئے دن رات کوشاں ہیں اور انکی خواہش بھی یہ ہی کہ نئے ٹیلنٹ کو کسی نہ کسی طرح بروئے کار لایا جائے۔

(جاری ہے)

انہوں نے حکومت سے سے اپیل کی کہ دیگر کھیلوں کی طرح آرچڑی کے کھیل پر بھی توجہ دیا جائے تاکہ ملک میں آرچڑی کے کھیل کو فروغ حاصل ہو، تعلیمی اداروں میں آرچڑی کے کھیل کی ترقی کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں نورین شاہ نے کہا کہ پاکستان آرچڑی فیڈریشن کے سیکرٹری جنرل وصال محمد خان کی کوشش اور کاوشوں سے پاکستان ہائر ایجوکیشن کمیشن کے زیراہتمام آل پاکستان انٹر یونیورسٹیز آرچڑی چیمپئن شپ کا انعقاد باقاعدگی سے ہورہا ہے جس میں مختلف یونیورسٹیز کی ٹیمیں بھر طریقے سے حصہ لیتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کسی ملک میں کھیلوں کی ترقی کیلئے انفراسٹرکچر بہت ضروری ہے اور گراس روٹ سطح پر کھیلوں کی ترقی کیلئے اکیڈمیز کا قیام بہت ضروری ہے جس میں دس سے بارہ سال کے بچوں کو تربیت دی جائے۔