چیریٹی میچ میں ورلڈ الیون کو شکست ،ْ ویسٹ انڈیز نے کامیابی حاصل کرلی

یادگار میچ میں ورلڈ الیون کے کپتان شاہد آفریدی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو غلط ثابت ہوا ویسٹ انڈیز کی جانب سے کیسرک ولیمز 3 وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باؤلر رہے ،ْ سیمیول بدری اور آندرے رسل نے دو، دو وکٹیں حاصل کیں

جمعہ جون 13:21

لارڈز (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) ویسٹ انڈیز نے آندرے رسل اور سیمیول بدری کی عمدہ باؤلنگ کی بدولت ورلڈ الیون کے خلاف چیریٹی میچ میں یکطرفہ مقابلے کے بعد 72رنز سے کامیابی حاصل کر لی۔گزشتہ سال کیریبیئن جزائر میں ارما اور ماریہ نامی طوفان سے مقامی کرکٹ اسٹیڈیمز بری طرح متاثر ہوئے تھے اور انٹرنیشنل کرکٹ کونسل، انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ اور میلبرن کرکٹ کمیٹی نے سمندری طوفانوں سے تباہ ہونے والے 5 اسٹیڈیمز کی تعمیر نو کیلئے فنڈز اکٹھا کرنے کی غرض سے چیریٹی میچ کے انعقاد کا فیصلہ کیا تھا۔

کرکٹ کے گھر لارڈز میں عظیم مقصد کے تحت کھیلے گئے اس یادگار میچ میں ورلڈ الیون کے کپتان شاہد آفریدی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو بالکل غلط ثابت ہوا۔

(جاری ہے)

شاہد آفریدی اپنے ممکنہ طور پر آخر انٹرنیشنل میچ کیلئے میدان میں اترے تو ورلڈ الیون کے تمام کھلاڑیوں نے انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا۔ایون لوئس کی جارحانہ بیٹنگ کی بدولت ویسٹ انڈین اوپنرز نے اپنی ٹیم کو 75رنز کا شاندار آغاز فراہم کیا اور اس شراکت کا خاتمہ افغان اسپنر راشد خان نے لوئس کو آؤٹ کر کے کیا جنہوں نے 26 گیندوں پر 5 چھکوں اور اتنے ہی چوکوں کی مدد سے 58رنز بنائے۔

ورلڈ الیون کو جلد ہی دو کامیابیاں اور ملیں جب شعیب ملک اور شاہد آفریدی نے بالترتیب کرس گیل اور آندرے فلیچر کی اننگز کا خاتمہ کیا۔اس کے بعد مارلن سیمیولز اور دنیش رامدین کی جوڑی وکٹ پر اکٹھا ہوئی اور دونوں کھلاڑیوں نے 52رنز کی شراکت قائم کر کے اپنی ٹیم کے بڑے اسکور کی راہ ہموار کی، سیمیولز 4 چھکوں کی مدد سے 43رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

اختتامی اوورز میں رامدین اور آندرے رسل نے جارحانہ انداز اپنایا اور دونوں کھلاڑیوں نے ناقابل شکست 47رنز کی شراکت قائم کر کے ویسٹ انڈیز کا اسکور 199 تک پہنچا دیا۔اننگز کے دوران فیلڈ میں کھلاڑیوں کے درمیان دلچسپ مناظر بھی دیکھنے کو بھی ملے تاہم سب سے خاص بات مایہ ناز کمنٹیٹر اور انگلینڈ کے سابق کپتان ناصر حسین کیمرے اور مائیک کے ساتھ مختلف فیلڈنگ پوزیشنز پر موجودگی تھی جس نے شائقین کو خوب محظوظ کیا۔

200 رنز کے ہدف کے تعاقب میں ورلڈ الیون کی ٹیم کا آغاز تباہ کن تھا اور صرف 8 رنز پر اس کے 4 کھلاڑی پویلین لوٹ چکے تھے جن میں تمیم اقبال، لیونک رونچی، دنیش کارتھک اور سیم بلنگز شامل تھے۔ورلڈ الیون کی ٹیم ابتدائی نقصان کے بعد سنبھل نہ سکی اور تھسارا پریرا کی 61رنز کی اننگز کے باوجود پوری ٹیم 127رنز پر ڈھیر ہو گئی اور ویسٹ انڈیز نے 72 رنز سے فتح اپنے نام کر لی۔انجری کے سبب ٹائمل ملز بیٹنگ کیلئے میدان میں نہیں آ سکے جبکہ ویسٹ انڈیز کی جانب سے کیسرک ولیمز 3 وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باؤلر رہے جبکہ سیمیول بدری اور آندرے رسل نے دو، دو وکٹیں حاصل کیں۔

متعلقہ عنوان :